توڑ پھوڑ کرنیوالوں کیخلاف کریک ڈاﺅن جاری،سینکڑوں گرفتار

توڑ پھوڑ کرنیوالوں کیخلاف کریک ڈاﺅن جاری،سینکڑوں گرفتار


اسلام آباد ( 24نیوز ) تحریک لبیک کے مزید 230 مظاہرین کیخلاف دو مقدمات درج کرلئے گئے،دونئے مقدمات اسلام آباد کے تھانہ کورال اور سہالہ میں درج کئے گئے ، دو نئے مقدمات میں انسداد دہشت گردی کی دفعہ نہیں لگائی گئی ،قبل ازیں درج چار مقدمات میں انسداد دہشت گردی کی دفعہ لگائی گئی تھی اسلام آباد دونوں مقدمات میں مقامی رہنماوں محمود الرحمان اور رضوان رضوی مرکزی ملزم نامزد کیے گئے،دو نئے مقدمات میں دس مظاہرین گرفتار کرلیا گیا ہے،مقدمات میں عوام کا راستہ روکنے ، ہلہ بولنے کی دفعات شامل کی گئی ہیں۔

ادھر دھرنے کے دوران توڑ پھوڑ اور املاک کو نقصان پہنچانے کے الزام میں گرفتار 26 ملزمان عدالت میں پیش کیے گئے ہیں، انسداد دہشتگردی عدالت نے 26 ملزمان کو جوڈیشل ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا تھانہ آئی نائن 10 اور شہزاد ٹاون تھانے سے گرفتار 16 ملزمان شامل جوڈیشل ریمانڈ مکمل ہونے پر ملزمان کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا گیا ہے،انسداد دہشتگردی عدالت نے 10 ملزمان کا تین روزہ ریمانڈ منظور کیا۔

پولیس کے مطابق شیخو پورہ میں بھی کارروائی کی گئی جہاں مختلف علاقوں سے 70شرپسندوں کو گرفتار کیا گیاہے،مزید گرفتاریوں کیلئے کارروائیاں جاری ہیں۔

دوسری جانب لاہورسمیت پنجاب بھرمیں سڑکوں کی بندش کامعاملہ مظاہرین اورپیرافضل قادری کیخلاف کارروائی کیلئے درخواست دائر، ہائیکورٹ کے جسٹس عاطرمحمودکل درخواست پرسماعت کریں گے درخواست سول سوسائٹی کے صدرعبداللہ ملک نے دائرکی ،پنجاب حکومت،چیف سیکرٹری اورآئی جی سمیت دیگرکوفریق بنایاگیاہے عدالتی فیصلے کوبنیادبناکرچندعناصرنے پوراصوبہ معطل کیے رکھا، اہم شاہراہیں بنداورایمبولینسزسمیت دیگراملاک کونقصان پہنچایاگیا، عام شہریوں اورمذہبی اقلیتوں کی زندگیوں کوشدیدخطرات لاحق ہیں،درخواست گزار نے کارروائی کی استدعا کی ہے۔

یاد رہے دھرنا ختم کرنے کیلئے حکومت پاکستان نے تحریک لبیک سے پانچ نکاتی معاہدہ کیا تھا جس میں آسیہ کیس کی نظرثانی،ملزمہ کا نام ای سی ایل میں ڈالنے اور دیگر شرائط شامل تھیں۔