ایم کیو ایم اور پی ٹی آئی میں اتحاد کی ڈوریں کمزور ہونے لگیں

ایم کیو ایم اور پی ٹی آئی میں اتحاد کی ڈوریں کمزور ہونے لگیں


کراچی(24نیوز) پی ٹی آئی اور ایم کیو ایم پاکستان میں اتحاد کا معاملہ الجھ گیا۔ پی ٹی آئی کراچی کے صدرفردوس شمیم نقوی کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم سے اتحاد مجبوری میں کیا۔دوسری جانب ایم کیو ایم کے فیصل سبزواری نے پریس کرتے ہوئے پی ٹی آئی سے مجبوری کا جواب طلب کرلیا۔

کراچی کے انصاف ہاؤس میں مختلف سیاسی جماعتوں سے تعلق رکھنے والے کارکنوں کی پی ٹی آئی میں شمولیت کے موقع پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے فردوس شمیم نقوی کا کہنا تھا مُجرمانہ ریکارڈ رکھنے والے کسی شخص کو پارٹی میں شامل نہیں کرینگے . فردوس شمیم نقوی کا کہنا تھا کہ ہمارے پاس بھی سب پارٹیوں کا ریکارڈ موجود ہے کون کب کہاں کیا کیا کرتا رہا ہے بہتر ہوگا کہ شامل ہونے والے افراد کو بلیک میل نا کیا جائے .

پڑھنا مت بھولیں: پی ٹی آئی کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس،عمران خان وزیر اعظم نامزد

شمیم نقوی کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی نے ایم کیو ایم سے اس لیے اتحاد کیا کیوں کہ ان کو ووٹ پورے کرنے تھے۔ انھوں نے کہا کہ ایم کیو ایم کو کراچی میں شکست ان کے مئیر وسیم اختر کی وجہ سے ہوئی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ الیکشن صاف شفاف ہوئے ہیں ، ڈبے دوبارہ کھلوانے میں انھیں کوئی ڈر نہیں۔ 

ایم کیو ایم رہنما فیصل سبز واری نے کہا کہ ابھی سے اس طرح کا رویہ رکھا گیا  تو آگے مشکلات بڑھ جائیں گی۔ انھوں نے کہا  کہ تحریک انصاف کی قیادت کے سامنے معاملہ رکھیں گے کہ قوم کے سامنے آکر بتائے ایسی کیا مجبوری تھی جس کی وجہ سے ہمیں انھوں نے پارٹی میں شامل کیا۔

یہ بھی پڑھیں: اسد عمر کا امریکا کو منہ توڑ جواب

دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف کے رہنما نعیم الحق کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم سے اتحاد کسی مجبوری میں نہیں کیا۔ انھوں نے کہا کہ فردوس شمیم نقوی کے بیان کا پی ٹی آئی سے کوئی تعلق نہیں ، یہ ان کی ذاتی رائے تھی اور اس حوالے سے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے ان سے ٹیلفونک رابطہ بھی کیا ہے جس میں انھوں نے ان کو  پیغام دیا ہے کہ  ایم کیو ایم سے اتحاد مجبوری نہیں حکمت عملی ہے، اتحاد   کراچی کی بھلائی،جمہوریت اورترقی کے لیے کیا گیا۔

ضرور پڑھیں:ضمیر کی آواز

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔