واٹر کمیشن نے میر پور خاص، سکھر، اور دیگر اضلاع کی پانی اسکیموں کو جلد فعال بنانے کا حکم دے دیا

واٹر کمیشن نے میر پور خاص، سکھر، اور دیگر اضلاع کی پانی اسکیموں کو جلد فعال بنانے کا حکم دے دیا


  کراچی ( 24نیوز ) سندھ ہائیکورٹ میں سندھ بھر میں پانی کی فراہمی و نکاسی کی صورتحال پر قائم کمیشن نے ریمارکس دہیے کہ لوگ بغیر فلٹریشن پانی پینے پر مجبور ہیں۔

تفصیلات کے مطابق  شہری بیماریوں کا شکار ہورہے ہیں۔ کمیشن نے میر پور خاص ، سکھر ، اور دیگر اضلاع کی پانی اسکیموں کو جلد فعال بنانے کا حکم دے دیا۔سندھ ہائیکورٹ میں پانی کی فراہمی و نکاسی کی ابتر صورت حال پر قائم کمیشن کی سماعت ہوئی، دوران سماعت کراچی کی ایم اے جناح روڈ پر پانی جمع ہونے پر کمیشن نے برہمی کا اظہار کیا۔

پڑھنا نہ بھولیں:چیف جسٹس پاکستان کا دیامر میں سکولوں کو جلائے جانے کا نوٹس 

 کمیشن کے سربراہ نے واٹر بورڈ کی کارکردگی پر سخت برہمی کا اظہار کیا۔ کمیشن نے ریمارکس دئیے کہ شہری گھنٹوں کال کرتے رہتے ہیں مگر انتظامیہ ہیلپ لائن پر فون تک نہیں اٹھاتی۔کمیشن نے اندرون سندھ میں پانی کی مختلف اسکیموں کو فعال نہ بنانے پر حکومت سندھ پر برہمی کا اظہار کیا۔ کمیشن نے ریمارکس دئیے کہ لوگ بغیر فلٹریشن پانی پینے پر مجبور ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:سٹی کورٹ کا احاطہ میدان جنگ بن گیا 

شہری پیٹ کے امراض کا شکار ہورہے ہیں۔ کمیشن نے میر پور خاص ، سکھر ، اور شکار پور اور دیگر علاقوں میں پانی کی زیر تعمیر اسکیموں کو جلد فعال بنانے کا حکم دے دیا۔ کمیشن نے انتظامیہ کو اسکیموں کو فعال بنانے کیلئے مہلت دے دی۔ کمیشن نے ڈائیرکٹر جنرل سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کو بھی صوبے بھر سے انڈر کنسٹرکشن مٹیریل اٹھانے کا حکم بھی دے دیا، سربراہ نے کمیشن کی مزید سماعت کل تک ملتوی کردی۔

شازیہ بشیر

Content Writer