خیبر پختو نخوا: ایک قبر پر 5 سے 7 لاکھ روپے خرچہ


پشاور(24نیوز) پتھریلی زمین اس پرکھدائی،ایک قبر پر5 سے 7 لاکھ روپے خرچہ، ایسا قبرستا ن ہے خیبرپختونخوا میں،یہ قبرستان 80 سال پرانا ہے۔

تفصیلات کے مطابق قبرستان کا نام سنتے ہی ذہن میں انسان کی آخری آرام گاہ کا خیال آتا ہے لیکن یہ قبرستان پرانے اور ضعیف قرانی اوراق کی عزت سے تدفین کیلئے بنایا گیا ہے۔پاکستان میں ضعیف قرآنی اوراق اور نسخوں کی تدفین کیلئے یہ قبرستان 80 سال پرانا ہے جو خیبر ایجنسی کے علاقہ ملا گوری میں واقع ہے۔ ملک بھر سے ضعیف قرانی نسخوں کواکٹھا کرنا اور پھر بوریوں میں ڈال کر انہیں 10 کلومیٹر دور جھنڈو بابا لے جا کر اور پر پتھریلی زمین کو کھود کر اس کی تدفین کرنا نہایت ہی کٹھن اور مہنگا کام ہے لیکن اس کے باوجود لوگ اسےثواب کے لیے بخوشی کھودتے ہیں۔ایک قبر پر 5 سے 7 لاکھ روپے خرچہ آتا ہے۔

واضح رہے کہ خیبر پختونخوا اور فاٹا کے مختلف علاقوں سے آئے لوگ ان قبروں کو نہایت احترام سے کھودتے ہیں اور پھر ضعیف اوراق اور قرانی نسخوں کو کفن میں طریقے اور عزت سے دفنا دیتے ہیں اس تدفین میں مقامی اور دور دراز کے لوگ نہایت دلچسپی سے حصے لیتے ہیں۔