اسٹیٹ بینک کی رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی کی جائزہ رپورٹ جاری

اسٹیٹ بینک کی رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی کی جائزہ رپورٹ جاری


کراچی(24 نیوز)رواں مالی سال جی ڈی پی کا 4 فیصد کا ہدف حاصل ہونے کا امکان نہیں، بڑی صنعتوں کی پیداوار میں کمی، مہنگائی میں ریکارڈ اضافہ ہوا،ٹیکس وصولی اور برآمدات میں پہلے کے مقابلے میں اضافہ ہوا، اسٹیٹ بینک نےرپورٹ جاری کردی۔

 اسٹیٹ بینک نے رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی کی معاشی صورتحال کے بارے میں جائزہ رپورٹ جاری کر دی، رپورٹ کے مطابق پاکستان کی معیشت بتدریج مطابقت کی راہ پر گامزن رہی، آئی ایم ایف کے پروگرام سے معاشی استحکام کی رفتار بڑھ گئی، تاہم خریف کے موسم کے نظرِثانی شدہ تخمینوں سے معلوم ہوتا ہے کہ اہم فصلوں کی پیداوار ہدف سے کم رہنے کا امکان ہے، بڑی صنعتوں کی پیداوار میں 5.9 فیصد کی کمی دیکھی گئی، جس کے باعث مجموعی طور پر حقیقی جی ڈی پی کی 4 فیصد نمو کا ہدف حاصل ہونے کا امکان نظر نہیں آتا۔

رپورٹ کے مطابق مالی سال کی پہلی سہ ماہی کے دوران مہنگائی کی شرح 11اعشاریہ پانچ فیصد رہی، جو گذشتہ برس کی پہلی سہ ماہی کے مقابلے میں دگنی تھی، رپورٹ کے مطابق پہلی سہ ماہی کے دوران ٹیکس کی وصولی اور برآمدات میں پہلے کے مقابلے میں اضافہ ہوا، تاہم براہ راست بیرونی سرمایہ کاری اور ترسیلات زر پچھلے مالی سال کی پہلی سہ ماہی کے مقابلے میں تھوڑی کم رہیں۔

Malik Sultan Awan

Content Writer