پاکستان میں پہلی مرتبہ طاقتور کو سزا ملی، عوام شکرانہ کے نوافل ادا کرے: عمران خان

پاکستان میں پہلی مرتبہ طاقتور کو سزا ملی، عوام شکرانہ کے نوافل ادا کرے: عمران خان


سوات (24 نیوز) چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان میں پہلی بار طاقتور کو سزاملی ہے، تمام پاکستانیوں کو 2،2نوافل ادا کرنے چاہیے۔ شریف برادران نے پاکستان میں کرپشن شروع کی۔

 سوات میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ میں سیاست میں پہلا شخص ہو جس نے کرپشن کی بات کی ہے۔ 1998 میں ان کے محلات کے سامنے جاکر احتجاج کیا لیکن کوئی سننے والا نہیں تھا۔ شریف برادران نے سیاست میں کرپشن شروع کی، لاہور میں لوگوں کو خریدا اور یہ سب ہمارے سامنے ہوا۔

یہ خبر بھی پڑھیں: ایون فیلڈ ریفرنس:نواز شریف کو10،مریم نواز کو 7سال قید

چیئرمین پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ زرداری اور شریفوں نے کرپشن کرنے اور خود کو محفوظ بنانے  کے لیے ملک کے ادارے تباہ کیے، حکمران ادارے تباہ کرکے کرپشن کرتا ہے کیونکہ جب ادارے مفلوج ہوجائیں تو ملک تباہ ہوجاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کرپشن نے ملک کو کینسر کی طرح کھا لیا ہے۔ آج بچہ بچہ مقروض ہے، یہ چور عوام کا پیسہ چوری کرکے باہر لے گئے۔

ان کا کہنا تھا کہ اللہ کا شکرگزار ہوں 22 سال پہلے یہ جدوجہد شروع کی، پہلی مرتبہ ایک طاقتور کو ملک کے انصاف کےنظام نے سزا دی، پہلے صرف کمزور لوگ جیلوں میں جاتے تھے اور طاقتور لوگوں کو پاکستان کے ادارے نہیں پکڑ سکتے تھے، آج سارے پاکستانیوں کو شکر ادا کرنا چاہیے کیونکہ یہ نئے پاکستان کی شروعات ہے۔

پڑھنا مت بھولئے:  احتساب عدالت کا فیصلہ مسترد،شہباز شریف کا تحریک چلانے کا اعلان

عمران خان نے کہا کہ اب سے ڈاکو اسمبلی میں نہیں جائیں گے اور نہ ہی وزیر نہیں بنیں گے، بڑے ڈاکو اب جیلوں میں جائیں گے، انہیں سزائیں ہوں گی، امید ہے 26 جولائی کو پاکستان میں نئے پاکستان کا سورج اگے گا۔

عمران خان نے کہا کہ ان لوگوں نے اپنی چوری بچانے کے لیے وہ کام کیا جو دشمن بھی نہیں کرتا، انہوں ںے کہا کہ ممبئی حملے فوج نے کرائے، ساری دنیا میں اس سے فوج کی بے عزتی ہوئی، آج ایف اے ٹی ایف نے پاکستان کو گرے لسٹ میں ڈال دیا، انہوں نے اپنی چوری بچانے کے لیے ملک کا نقصان کرایا اور ہر سطح پر گئے، نوازشریف نے ثابت کیا کہ پیسہ بچانے کے لیے وہ کچھ بھی کرسکتے ہیں۔

یہ خبر بھی لازمی پڑھیں: مریم نواز کی جگہ اب کون؟ نام سامنے آگیا

انہوں نے مزید کہا کہ خیبرپختونخوا میں یہ ہماری پہلی باری تھی جس سے بہت کچھ سیکھا، اب اللہ نے موقع دیا تو عوام سے وعدہ کرتا ہوں ہمیشہ سچ بولوں گا اور پروپیگنڈا نہیں کروں گا، جیسا مہاتیر محمد نے احتساب کیا ایسا احتساب کروں گا، سب الیکشن لرنے سے لڑیں گے۔

عمران خان کا کہنا تھا ان لوگوں کو صرف یہ جواب دینا تھا کہ پیسہ کہاں سے آیا اور ملک سے باہر کیسے گیا، میں تو ایک کرکٹر تھا کوئی وزیر یا وزیراعظم نہیں تھا، 34 سال پہلے فلیٹ لیا، اگر میں دستاویزات دے سکتا ہوں تو ملک کا وزیراعظم نہیں بتاسکتا کہ اربوں کی جائیداد کیسے آئی اور کیسے باہر گئی۔