شریف خاندان کے گرد گھیرا تنگ، نیب کو اہم ثبوت مل گئے


لاہور(24نیوز) نیب نےشریف خاندان کے خلاف شواہد اکٹھے کرلیے۔ نیب کوبرطانیہ، یو اے ای، یورپ سے ناقابل تردید ثبوت مل گئے۔

تفصیلات کے مطابق طارق شفیع کا حلف نامہ یو اے ای کی حکومت نے جعلی قرار دے دیا ہے۔ ہل میٹل اسٹبلشمنٹ کی طرف سے 28 کروڑ روپے شریف خاندان کو منتقل کیے گئے ہیں۔ فلیگ شپ ریفرنس میں یو اے ای نے نیب کو چار خطوط بھیجے ہیں، نواز شریف کی کیپیٹل ایف ذی ای میں ملازمت کا خط بھی نیب کو موصول ہوگیا ہے۔

دستاویزات کے مطابق حسن نواز کی 10 آف شور کمپنیاں سامنے آگئی ہیں۔ حسن نواز نے چودھری شوگر مل کو 8 کروڑ سے زائد کا قرضہ دیا ہے ۔دستاویزات میں درج ہے کہ فلیٹ 1993 سے 1996 کے درمیان بنے ہیں۔ اوسابا بنک کے مطابق مناروا سروسز مریم نواز کیلئے لند فلیٹس کی رکھوالی کرتا تھا۔

یہ بھی پڑھیں:کون شکنجے میں پھنسے گا،سپریم کورٹ نے فیصلہ کر لیا

فلیگ شپ کمپنیوں کیلئے پاکستان سے 48 کروڑ کا قرضہ بھیجا گیا۔ جائیداد کی منتقلی کی تصدیق برطانیہ فرم نے کردی ہے۔ العزیزیہ سٹیل مل سے متعلق بھی نیب نے مزیدشواہد حاصل کیے ہیں ۔ ایف بی آر کے ریکارد کے مطابق 1996 سے 2001 تک شریف خاندان کے اثاثہ 6 کروڑ روپے تھے۔ ایف بی آر کے مطابق یہ اسٹیٹمنٹ بڑے میاں محمد شریف نے دی تھی۔