دانیال عزیز کی قسمت نے ساتھ نہ دیا، عدالت عظمیٰ نے سزاؤں کی فہرست مرتب کرلی


اسلام آباد (24 نیوز) توہین عدالت کیس میں وفاقی وزیردانیال عزیز کی تمام کوششیں بیکار ثابت، عدالت عظمیٰ نے بڑا فیصلہ کر دیا۔

قبل ازیں سپریم کورٹ نے وفاقی وزیر نجکاری دانیال عزیز کی عدلیہ مخالف توہین آمیز تقاریر کا از نوٹس لیا۔ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے توہین عدالت کا نوٹس جاری کرتے ہوئے دانیال عزیز کو 7 فروری کو ذاتی حیثیت میں سپریم کورٹ میں پیش ہونے کا حکم دیا۔

بعد ازیں جسٹس عظمت سعید کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے توہین عدالت کیس کی سماعت کی۔ دانیال عزیز اپنے وکیل علی رضا ایڈووکیٹ کے ہمراہ عدالت میں پیش ہوئے۔ وفاقی وزیر کے وکیل نے جواب جمع کرانے کے لیے وقت مانگا۔

جسٹس عظمت سعید کا ریمارکس دیتے ہوئے کہنا تھا کہ بادی النظر میں دانیال عزیز توہین عدالت کے مرتکب ہوئے ہیں۔ ہم اظہار وجوہ کا نوٹس دے رہے ہیں آپ جواب جمع کرا دیں۔

یہ بھی پڑھئے:شریف خاندان کے گرد گھیرا تنگ، نیب کو اہم ثبوت مل گئے

عدالتی احکامات پر عمل کرتے ہوئے 5 مارچ کو دانیال عزیز نے شوکاز نوٹس کا جواب سپریم کورٹ میں جمع کرا دیا۔ دریں اثنا جواب میں دانیال عزیز نے سارا ملبہ میڈیا پر ڈالتے ہوئے کہا کہ میڈیا کی منفی اور جانبدارانہ رپوٹنگ سے تضحیک کا تاثر ملا۔

شوکاز نوٹس کے جواب میں کہا گیا کہ درخواست گزار پاکستانی ہونے کے ناطے تمام اداروں کے وقار کو مقدم جانتا ہے۔ میڈیا نے سیاق و سباق سے ہٹ کر بیان کو چلایا۔ مجھے دیا گیا شوکاز نوٹس واپس لیا جائے۔

وفاقی وزیر مملکت کی جانب سے جواب میں کہا گیا زیرالتوا مقدمات پرضابطہ اخلاق کے دائرہ میں رہ کربات کی۔ ہمیشہ عدالتوں کا احترام کیا۔ کبھی آئینی اداروں کے وقارکو کم کرنے کی کوشش نہیں کی۔ عدالتی کارروائی اور انصاف کی راہ میں کبھی رکاوٹ نہیں بنا۔ جوانی میں بطور پبلک سروس آفیسر ریاستی اداروں کے لیے کام کر چکا ہوں۔ کبھی ریاستی اداروں کی توہین و تضحیک کا سوچ بھی نہیں سکتا۔

لیکن عدالت نے ان کی تمام تر صفائیوں کو ایک طرف رکھتے ہوئے فردِ جرم عائد کرنے کا فیصلہ سنا دیا۔ وفاقی وزیر نجکاری برائے مملکت پر فردِ جرم 13 مارچ کوعائد کی جائے گی۔

پڑھنا نہ بھولئے:نہال ہاشمی اپنی حرکتوں سے باز نہ آئے،عدالت نے علاج ڈھونڈ لیا

عدالت نے دانیال عزیزکے خلاف توہین عدالت کی کارروائی روکنے کی استدعا مسترد کر دی۔ جسٹس شیخ عظمت سعید کا کہنا تھا کہ عدالت دانیال عزیزکے جواب سے مطمئن نہیں۔

واضح رہے کہ اس سے قبل سپریم کورٹ نے مسلم لیگ ن کے سینیٹر نہال ہاشمی کو توہین عدالت کیس میں 5 سال کے لیے نا اہل قرار دیتے ہوئے ایک مہینہ قید اور 50 ہزار روپے جرمانے کی سزا سنائی تھی۔ اس کے علاوہ وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چوہدری کو بھی توہین عدالت کا نوٹس جاری کیا گیا تھا۔

یہ ویڈیو بھی ضرور دیکھیں: