بلوچستان حکومت نے اپنی کارکردگی عوام کے سامنے رکھ دی

بلوچستان حکومت نے اپنی کارکردگی عوام کے سامنے رکھ دی


کوئٹہ(24نیوز)حکومت بلوچستان نے اپنی ششماہی کارکردگی رپورٹ شائع کر دی، ترجمان وزیر اعلیٰ کے مطابق چھ ماہ کے دوران بلوچستان اسمبلی سے6قراردادیں منطور کرائی گئیں، اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی، کوئٹہ پیکج، تعلیم اور صحت کو جدید خطوط پر استوارکرنے کے لئے اقدامات اٹھائے گئے۔

ترجمان وزیر اعلی بلوچستان محمد عظیم کاکڑ کے مطابق حکومت بلوچستان صوبے کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کے وعدے پر عمل پیرا ہے،حکومت بلوچستان کی ششماہی رپورٹ پیش کرتے ہوئے ترجمان کا کہنا تھا کہ جام کمال خان کی قیادت میں صوبائی حکومت کی جانب سے سی ایم آئی ٹی کو فعال کر دیا گیاہے۔صوبے کے بے روز گار نوجوانوں کے لئے20ہزار نئی اسامیوں پر تعیناتی کے لئے صوبائی کابینہ نے منظوری بھی دی ہے۔

بی آر اے ایکٹ کے تحت ٹیکسز کی مد میں صوبے کو ملنے والے سالانہ 6کروڑ کو6ماہ کی قلیل مدت کے دوران 4ارب روپے کی ریکارڑ آمدن پر لا کھڑا کرنا حکومت کی کامیابی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔

محمد عظیم کاکڑ نے بتایا کہ6ماہ کے دوران بیڈا ایکٹ 2011کے تحت اہم عہدوں پر فائز آفیسران کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کیا گیا ہے،حکومت بلوچستان کی شعبہ صحت اور تعلیم میں ایمرجنسی کا نفاذایک اہم سنگ میل ہے،ترجمان کے مطابق جام کمال خان پر تنقید کرنے والے ان کی کامیابی سے خوف زدہ ہیں۔

حکومت بلوچستان کی جانب سے شہر کی خوبصورتی کے لئے ایک ارب روپے مختص کئے گئے ،6ماہ کے دوران امن و امان کی صوررتحال میں بہتری کے ساتھ ساتھ کمشنرز اور ڈپٹی کمشنرز کو خصوصی اختیارات بھی فراہم کئے گئے ہیں۔