آصف زرداری کیلئے پرائیویٹ میڈیکل بورڈ بنانے کی درخواست

آصف زرداری کیلئے پرائیویٹ میڈیکل بورڈ بنانے کی درخواست


اسلام آباد(24 نیوز)پیپلزپارٹی  نے سابق صدر آصف علی زرداری کو لاحق خطرات پر تشویش کا اظہار کیا ہے،پیپلز پارٹی نے سرکاری ڈاکٹروں کی بورڈ کے سفارشات پر پرائیویٹ میڈیکل بورڈ بنانے کی درخواست دے دی۔

جیل حکام کو دی گئی درخواست میں کہا گیا ہے کہ سابق صدر کی صحت کو شدید خطرات لاحق ہیں۔ادھر میڈیکل بورڈ نے سابق صدر کا خون کی روانی اور شریانوں کو چیک کرنے کیلیے اسٹریس ایکو ٹیسٹ کرنے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔

اسلام آباد کے پمز ہسپتال میں زیرعلاج سابق صدر آصف علی زرداری کے علاج کیلیے پیپلز پارٹی نے پرائیوٹ میڈیکل بورڈ بٹھانے کا مطالبہ کردیا،پی پی پی نے پرائیویٹ میڈیکل بورڈ کا مطالبہ  سرکاری ڈاکٹرز کی بورڈ کی سفارشات کی روشنی میں کیا۔

جیل حکام کو دی جانے والی درخواست میں پیپلز پارٹی نے مطالبہ کیا ہےکہ سرکاری ڈاکٹرز کے بورڈ نے رپورٹ آصف زرداری کی صحت کو لاحق سنجیدہ مسائل کی نشاندہی کی۔خاندان اور پارٹی کے اطمینان کیلئے پرائیویٹ ڈاکٹرز اور ماہرین کا بورڈ بنایا جائے۔

خط میں کہاگیا ہےکہ حکومت کے بنائے بورڈ نے آصف زرداری کی صحت کے حوالے سے خطرے کا اظہار کر دیا ہے،سرکاری بورڈ کے مطابق صدر زرداری کی شریانوں میں خون کا جمنا ان کی زندگی کیلئے خطرناک ہے،آصف زرداری کا شوگر لیول بھی خطرناک حد تک اوپر نیچے ہو رہا ہے،شوگر  لیول کا کنٹرول نہ ہونا آصف زرداری کی زندگی کیلئے خطرناک ثابت ہو سکتا ہے ،سرکاری بورڈ نے جیل میں ہڈیوں کی بیماری کی  وجہ سے مناسب بستر نہ ملنے سے پیدا مسائل کا بھی ذکر کیا ہے۔

آرتھو بیڈنگ نہ ملنے کی وجہ سے آصف زرداری کی کمر کا دیرینہ مرض شدت اختیار کر گیا ہے،سرکاری بورڈ نے اپنی رپورٹ میں سابق  صدر زرداری کے علاج کیلئے نیورولوجسٹ کی مدد لینے کی بھی سفارش کی ہے،ترجمان بلاول بھٹو زرداری مصطفی نواز کھوکھر کا کہناہےکہ علاج معالجے کی مناسب سہولت ہر شخص یا قیدی کا بنیادی حق ہے،،قانون ہر شخص اور قیدی کے علاج معالجے کی ضمانت دیتا ہے۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer