منی لانڈرنگ اور دہشتگردوں کی مالی معاونت روکنا بڑا چیلنج

منی لانڈرنگ اور دہشتگردوں کی مالی معاونت روکنا بڑا چیلنج


اسلام آباد(24نیوز) پاکستان کے لیے منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی معاونت کو روکنا بڑا چیلنج بن گیا، کہیں فالودے والے کے اکاؤنٹس سے اربوں روپے برآمد ہورہے ہیں تو کہیں ڈرائیور کے اکاؤنٹس میں کروڑوں روپے ڈال دیے جاتے ہیں ، پاکستان منی لانڈرنگ کو کیوں نہیں روک پا رہا؟ 

منی لانڈرنگ کو روکنا پاکستان کے لیے بڑا چیلنج بن گیا۔ کرپشن اور کالے دھن کی رقم کو حوالہ ، ہنڈی اور لانچوں کے ذریعے بیرون ملک بھیجی جاتی ہے جس کے بعد اسے قانونی طریقے سے ترسیلات زر کی صورت میں واپس پاکستان لایا جاتا ہے، اس ہیرا پھیری میں قومی معیشت کو تقریبا 10 ارب ڈالرز کا نقصان ہوتا ہے۔

پاکستان کے بڑے بڑے کاروباری افراد سالانہ اربوں روپے کی ٹیکس چوری کرتے ہیں اور فارن کرنسی اکاونٹس کے ذریعے پیسہ بیرون ملک بھیجتے ہیں۔فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے مطابق پاکستان کے قوانین منی لانڈرنگ کو روکنے کے لیے موثر نہیں ہیں جس کی وجہ سےبڑے ٹیکس چوراورطاقت ورسرمایہ کارقانون کی گرفت میں آںے سے بچ جاتے ہیں ۔