بھارت اگلی کارروائی کب کرے گا؟ وزیرخارجہ نے پیشگوئی کردی



ملتان(24نیوز) وزیرخارجہ نے کہا کہ پلوامہ واقعےکے بعد بھارت نے پاکستان پرالزامات کی بوچھاڑ کردی،جنگ کے بادل اب بھی منڈلا رہے ہیں، بھارت کی طرف سے 16 سے 20 اپریل تک کارروائی کی جاسکتی ہے.

تفصیلات کے مطابق وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے ملتان میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ بھارت پاکستان پر جارحیت کاایک اور منصوبہ بنارہا ہے،مقبوضہ کشمیر پلوامہ جیسا ایک اور واقعہ رونما کیا جاسکتا ہے،پاکستان نےہمیشہ کشمیریوں کی پرامن جدوجہد کوسراہا ہے،ہم مقبوضہ کشمیر کےمتاثرین کےساتھ تھےاورہیں، بھارت اپنی کانامیوں پر پردہ ڈالنے کے لئے نئی منصوبہ بندی کررہا ہے، بھارت کی طرف سے 16 سے 20 اپریل تک کارروائی کی جاسکتی ہے،بھارتی جارحیت پر بہت سے ممالک نے خاموشی اختیار کی ہوئی ہے، عالمی طاقتیں خطے میں امن کے لئے اپنا کردار ادا کریں۔

وزیرخارجہ کاکہناتھاکہ رواں سال 360 قیدیوں کو رہا کرنے کا فیصلہ کیا،پاکستان نے بغیر کسی دباؤ کے بھارتی پائلٹ کو رہا کیا،  کشمیریوں کو بے دردی سے کچلا جارہا ہے،لائن آف کنٹرول پرمسلسل فائرنگ جاری ہے جبکہ پلوامہ واقعےکے بعد بھارت نے پاکستان پرالزامات کی بوچھاڑ کردی،پلوامہ واقعہ کے بعد بھارت کا رویہ سب نے دیکھا، بھارت نے جنگی جنون کو ہوا دی اورخطے کے امن و استحکام کومتاثر کیا گیا،پاکستان نے کشیدگی کم کی مگر بھارت بڑھاتا رہا،قومی سلامتی کا معاملہ بہت سنجیدہ ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ جنگ کے بادل اب بھی منڈلا رہے ہیں،ہمارے پاس انٹیلی جنس ہے بھارت نئے منصوبے کی پلاننگ کررہا ہے،دوبارہ جارحیت کی کوشش کی تودفاع کا حق محفوظ رکھتے ہیں،امیدکرتاہوں بھارت اس اہمیت کوسمجھےگا، مودی سرکار نے سیاسی مقاصد کے لئے پورے خطے کے امن کو داؤ پر لگا دیا ہے۔

وزیرخارجہ کا مزید کہناتھاکہ ہمارے سو اختلافات سہی لیکن ہم جارحیت کیخلاف ایک ہیں، اپوزیشن سےدرخواست ہےقومی سلامتی کےمعاملات پرساتھ دے،اپوزیشن کےساتھ بیٹھنے سےہم نےکبھی انکارنہیں کیا، بھارتی جارحیت کے حوالے سےسیکرٹری خارجہ نےچین،امریکا،برطانیہ اوردیگرممالک سےرابطہ کیاہے۔

M.SAJID KHAN

CONTENT WRITER