انتہا پسند فارن پالیسی ایجنڈا بڑھانا چاہتے ہیں، روکنا ہوگا: بلاول بھٹو زرداری

انتہا پسند فارن پالیسی ایجنڈا بڑھانا چاہتے ہیں، روکنا ہوگا: بلاول بھٹو زرداری


واشنگٹن(24نیوز)پاکستان پیپلزپارٹی کے چیرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ حقانی نیٹ ورک کو ہر صورت میں ختم کیا جائے ،ان سے ہتھیار رکھوائے جائیں۔کسی بھی قسم کے انتہاپسند اور عسکریت پسند جو اپنا فارن پالیسی ایجنڈآ گے برھانا چاہتے ہیں۔

تفصیلات کےمطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے واشنگٹن میں کانگریس کے رکن بریڈ شرمن سے ملاقات کے دوران کیا۔ملاقات میں پاک امریکہ تعلقات انتہاپسندی کے خلاف جنگ اور انسانی حقوق کے مسائل پر بات چیت، بلاول بھٹو زرداری نے پاکستان اور افغانستان کے درمیان سرحدوں پر عسکریت پسندوں کے داخل ہونے کے الزامات کی تحقیقات کے لئے بین الاقوامی تعاون سے ایک قابل قبول طریقہ کار اختیار کرنے کی تجویز بھی دی۔

یہ بھی پڑھئے: آصفہ بھٹو کی پارلیمانی سیاست میں انٹری

  پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کیپٹل ہل میں کانگریس کے رکن بریڈ شرمن سے ملاقات کی۔45منٹ کی ملاقات میں پاک امریکہ تعلقات، انتہاپسندی کے خلاف جنگ اور انسانی حقوق کے مسائل زیر بحث آئے۔ سینیٹر فرحت اللہ بابر، سابق سینیٹر اکبر خواجہ اور بریڈ شرمن کے اسٹاف کے سینئر اراکین بھی اس ملاقات میں موجود تھے۔

ضرور پڑھئے: پاک افغان بارڈر پر باڑ لگائے جانے سے متعلق قبائل، سکیورٹی حکام میں گرینڈ جرگہ

دوسری جانب واشنگٹن میں ووڈ رو ولسن تھنک ٹینک سے خطاب میں بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ کسی بھی قسم کے انتہاپسند اور عسکریت پسند جو اپنا فارن پالیسی ایجنڈآ گے برھانا چاہتے ہیں وہ امن اور سکیورٹی کے لئے خطرہ ہیں اور انہیں کہیں بھی قدم جمانے کی اجازت نہ دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ حقانی نیٹ ورک کو ہر صورت میں ختم کیا جائے اور ان سے ہتھیار رکھوائے جائیں۔

واضح رہے کہ ووڈرو ولسن انسٹی ٹیوٹ کی تقریب میں سابق سفیر، اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کے سابق افسران، محققین اور مختلف اسکالرز نے بھی شرکت کی۔