نگران حکومت نے کیپٹن صفدر کے بھاگنے کا راستہ روک دیا

نگران حکومت نے کیپٹن صفدر کے بھاگنے کا راستہ روک دیا


اسلام آباد( 24نیوز )”ڈان کو پکڑنا مشکل ہی نہیں ناممکن بھی ہے،،ایسا ڈائبلاگ تو آپ نے سنا ہی ہوگا،لیکن جس ڈان کی نیب کو تلاش ہے اسے پکڑنے میں اتنی دشواری نہیں ہوگی لیکن یہ ابھی تک پکڑا نہیں گیا،اس ڈان کا ملک سے فرار کا راستہ ضرور روک دیا گیا ہے۔
جی ہاں احتساب عدالت سے ایون فیلڈ ریفرنس میں سزا پانیوالے سابق وزیراعظم نواز شریف کے داماد کیپٹن (ر) محمد صفدر کا نام بلیک لسٹ میں ڈال دیا گیا ہے،ذرائع کے مطابق کیپٹن (ر) صفدر کسی بھی ایئرپورٹ، زمینی اور سمندری روٹ سے پاکستان سے باہر نہیں جا سکیں گے۔

یہ بھی پڑھیں:  نواز شریف ،مریم نواز کیخلاف برطانیہ میں بھی گھیرا تنگ
دوسری جانب کیپٹن (ر) صفدر بھی گزشتہ روز فیصلہ سنائے جانے کے موقع پر عدالت میں پیش نہیں ہوئے، جن کے حوالے سے اطلاعات سامنے آئی تھیں کہ وہ اپنی انتخابی مہم کے سلسلے میں مانسہرہ میں موجود تھے، کیپٹن (ر) صفدر کی گرفتاری عمل میں نہ آسکی۔
ڈی آئی جی ہزارہ عالم شنواری کا کہنا ہے کہ انہیں کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی گرفتاری کے لئے تحریری احکامات موصول نہیں ہوئے، تحریری احکامات موصول ہوتے ہی گرفتاری عمل میں لائی جائے گی۔

 یہ بھی پڑھیں:  ایون فیلڈ ریفرنس:نواز شریف کو10،مریم نواز کو 7سال قید
واضح رہے کہ گزشتہ روز اسلام آباد کی احتساب عدالت کی جانب سے ایون فیلڈ ریفرنس کیس میں سابق وزیراعظم نواز شریف کو مجموعی طور پر 11 سال قید اور 80 لاکھ پاو¿نڈ جرمانہ، ان کی صاحبزادی مریم نواز کو مجموعی طور پر 8 سال قید اور 20 لاکھ پاونڈ جرمانہ جبکہ داماد کیپٹن (ر) صفدر کو ایک سال قید کی سزا سنائی گئی،دوسری جانب عدالت نے ایون فیلڈ اپارٹمنٹس کو بھی ضبط کرنے کا حکم دیا،احتساب عدالت نے یہ فیصلہ ملزمان کی غیر موجودگی میں سنایا تھا۔
سابق وزیراعظم نواز شریف اپنی صاحبزادی مریم نواز کے ہمراہ کینسر کے مرض میں مبتلا اپنی اہلیہ بیگم کلثوم نواز کی عیادت کے لیے لندن میں موجود ہیں، جو اِن دنوں وینٹی لیٹر پر ہیں۔