ن لیگ نے نگران وزیر اعلیٰ پنجاب حسن عسکری کی تقرری مسترد کردی

ن لیگ نے نگران وزیر اعلیٰ پنجاب حسن عسکری کی تقرری مسترد کردی


لاہور( 24نیوز ) مسلم لیگ ن نے پروفیسر حسن عسکری کی نامزدگی کو مسترد کردیا ہے۔

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے احسن اقبال، سعد رفیق اور خرم دستگیر کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ پنجاب کیلئے نامزد کردہ وزیر اعلیٰ پر اعتراض ہے ،الیکشن کمیشن کا فیصلہ رد کرتے ہیں،حسن عسکری متنازعہ شخصیت ہیں ان کے خیالات کا اندازہ اخبارات میں چھپنے والے کالمز سے لگایا جاسکتا ہے۔ پنجاب کے نگران وزیراعلیٰ کی تقرری کا معاملہ پورے الیکشن عمل کو مشکوک بنادےگا، ہمارے نامزد کردہ افراد اچھی شہرت کے حامل تھے ان کی غیر جانبداری پر کوئی شک نہیں تھا لیکن یہ بدقسمتی ہے کہ الیکشن کمیشن نے حسن عسکری کا نام فائنل کیا۔

یہ بھی پڑھیں:  نگران وزیراعلیٰ پنجاب الیکشن ملتوی کرنے کے حامی نکلے

مقامی اخبارمیں چوبیس اپریل کو لکھے گئے آرٹیکل میں الیکشن کی تاریخ میں توسیع کی وجہ گرمی ،بارش اور سیلاب کو قرار دیا۔ڈاکٹر حسن عسکری رضوی نے تجزیاتی آرٹیکل میں یہ بھی لکھا کہ جون، جولائی اور اگست میں کبھی بھی پاکستان میں عام انتخابات نہیں ہوئے۔

انہوں نے کہا کہ (ن) لیگ، اس کی قیادت اور جمہوریت کے بارے میں حسن عسکری کے خیالات سے لوگ خود واقف ہيں، ان کے ٹوئٹ اور آرٹیکل (ن) لیگ کے خلاف موجود ہیں جو ہماری پارٹی سے تعصب کا اظہار کرتے ہیں۔

 

انھوں نے مزید کہاکہ کچھ لوگ الیکشن سے قبل سیاستدانوں کے خلاف جاری تحقیقات کی تکمیل بھی چاہتے ہیں۔ حلقہ بندیوں کے معاملات کے التواء کو بھی جواز بنایا جبکہ ن لیگ کے رہنما اورسابق وزیرداخلہ احسن اقبال کا حسن عسکری کی الیکشن ملتوی کرنےکی حمایت پراظہارتشویش کیا، اپنے ٹوئٹ میں کہاکہ یہ بہت سنجیدہ معاملہ ہے۔