حکومتی قرضوں اور عوام کی عید شاپنگ سے بینکنگ سیکٹر میں سرمائے کی قلت بڑھ گئی

حکومتی قرضوں اور عوام کی عید شاپنگ سے بینکنگ سیکٹر میں سرمائے کی قلت بڑھ گئی


 کراچی( 24نیوز )حکومتی قرضوں اور عوام کی عید شاپینگ نے بینکنگ سیکٹر میں سرمائے کی قلت مزید بڑھ گئی، بینکوں نے اپنی ضروریات پوری کرنے کے لیے مرکزی بینک سے ساڑھے بارہ کھرب روپے سے زائد رقم ادھار لی۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق مارکیٹ میں سرمائے کی کمی دور کرنے کے لیے بینکنگ سیکٹر کو اوپن مارکیٹ آپریشن کے ذریعے بارہ کھرب اکاون ارب دس کروڑ روپے فراہم کیے گئے۔ چھ روز کے لیے قرض دی جانے والی رقم پر مرکزی بینک چھ اعشاریہ پانچ چار ایک فیصد سالانہ کی شرح سے سود وصول کرے گا۔بینکوں کی طرف سے تیرہ کھرب چھیاسی ارب روپے کی ڈیمانڈ کی تھی، گزشتہ ہفتے بھی مرکزی بینک نے بینکنگ سیکٹر کو دو سو دس ارب روپے فراہم کیے تھے۔

یہ بھی پڑھیں:پاکستان سے کینو کی برآمد 3 لاکھ 70 ہزار ٹن تک پہنچ گئی

 دوسری جانب اسٹیٹ بینک کے مطابق مئی کے آخری ہفتے کے دوران بیرون ملک سے سرکاری وصولیوں کے باعث مرکزی بینک کے زرمبادلہ کی ذخائر میں 78 لاکھ ڈالر کا اضافہ رکارڈ کیا گیا۔جبکہ اس دوران کمرشل بینکوں کے پاس ڈالروں میں بھی 50 لاکھ ڈالر کا اضافہ ہوا۔ جس کے باعث ہفتے کے اختتام پر زرمبادلہ کے ذخائر کا مجموعی حجم 1 کروڑ 28 لاکھ ڈالر کے اضافے سے 16 ارب 41 کروڑ 96 لاکھ ڈالر ہو گیا۔

پڑھنا نہ بھولیں:موبائل اور انٹرنیٹ بینکنگ میں سو فیصد اضافہ 

 تاہم رواں مالی سال ساڑھے چار ارب ڈالر سے زائد کے نئے قرضوں کے باوجود مرکزی بینک کے پاس زرمبادلہ کی ذخائر میں گیارہ ماہ کے دوران مجموعی طور پر 6 ارب 10 کروڑ ڈالر کی کمی ہو چکی ہے۔

شازیہ بشیر

   Shazia Bashir   Edito