داعش پاکستان میں کم عمر لڑکیوں کی ذہن سازی کرتی ہے؟ گرفتار دہشتگرد نے ایپلی کیشن بھی بتا دی


کراچی(24نیوز) دہشتگردسرگرمیوں کے لئے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال بڑھنے لگا۔ ایف آئی اے کے ہاتھوں گرفتارداعش کے دہشت گرد نے ذہن سازی کے لئے ٹیلی گرام نامی ایپلی کیشن کے استعمال اورکم عمرلڑکیوں کی ذہن سازی کا انکشاف کردیا۔

کراچی سے ایف آئی اے کاؤنٹر ٹیررازم ونگ کے ہاتھوں شیریں جناح کالونی سے گرفتار عالمی دہشت گرد تنظیم داعش کے دہشت گرد عمران عرف سیف الاسلام نے دوران تفتیش سرگرمیوں کے لئے جدید ٹیکنالوجی کے استعمال کا انکشاف کردیا ہے۔

 گرفتار دہشت گرد عمران عرف سیف الاسلام داعش کے لئے کراچی میں سوشل میڈیا کے ذریعے ذہن سازی کا کام سرانجام دے رہا تھا۔

ذرائع کے مطابق عمران عرف سیف الاسلام داعش نے انکشاف کیا ہے کہ پکڑے جانے سے بچنے کے لئے پراکسی سرورز اور پراکسی ایپلی کیشن سے آئی پی ایڈریس اور لوکیشن تبدیل کرکے سوشل میڈیا پر ذہن سازی کا کام کرتا تھا۔

یہ بھی پڑھیں:واٹس ایپ صارفین ہو جائیں ہوشیار، پنجاب حکومت نے اہم انکشاف کر دیا

 واٹس ایپ اور موبائل فون باآسانی ٹریس ہونے لگے تو ٹیلی گرام نامی ایپلی کشن استعمال کرنا شروع کیا۔ عمران عرف سیف الاسلام نے مزید انکشاف کیا ہے کہ کم عمر لڑکیوں کی ذہن سازی قدرے آسان ہوتی ہے اس لئے بالخصوص کم عمر لڑکیوں کو ہدف بنایا اور داعش کی جانب راغب کرنے کا کام سرانجام دے رہا تھا۔

یہ بھی پڑھیں:موبائل صارفین کیلئے بری خبر، واٹس ایپ بند کرنے کا فیصلہ

 ایف آئی اے حکام کے مطابق عمران عرف سیف الاسلام آٹھ جماعت پاس لیکن انٹرنیٹ کا ماہر ہے اور انٹرنیٹ کی تربیت داعش سے منسلک دہشت گردوں سے حاصل کی گئی ہے اور دوران تفتیش مزید انکشافات اور گرفتاریوں کی توقع ہے۔