کوہستان ویڈیو سکینڈل کا مرکزی مدعی قتل

کوہستان ویڈیو سکینڈل کا مرکزی مدعی قتل


پشاور(24نیوز)  کوہستان ویڈیو سکینڈل کے مدعی کو فائرنگ کر کے قتل کردیا گیا، مقتول کے دو ساتھی بھی زخمی ہوئے۔

تفصیلات کے مطابق کوہستان ویڈیو سکینڈل کے مرکزی کردار و مدعی افضل کوہستانی کو ایبٹ آباد میں فائرنگ کرکے قتل کر دیا گیا جبکہ دو ساتھی زخمی بھی ہوئے، ملزمان کو موقع سے گرفتار کرلیا گیا، افضل کوہستانی کا قتل ہونے سے قبل ریکارڈ کیا گیا ویڈیو پیغام ٹوئنٹی فور نیوز نے حاصل کرلیا،پولیس کاکہنا تھاکہ افضل کوہستانی کو ایبٹ آباد بازار میں فائرنگ کرکے قتل کیا گیا،  افضل کوہستانی کے ہمراہ دو ساتھی زخمی بھی ہوئے،  افضل کوہستانی کی میت اور ساتھی زخمیوں کو ڈی ایچ کیو منتقل کر دیا گیا۔

واقع کے بعد پولیس کے بھاری نفری جائے وقوع پہنچ گئی، افضل کوہستانی کی قتل ہونے سے قبل ویڈیو بھی منظر عام پر آگئی جس میں ان کا کہنا تھاکہوہ جان کے تحفظ کیلئے تھانے گیا تو پولیس نے اس کو شدید تشدد کا نشانہ بنایا اورحوالات میں بھی بند کیا گیا، جو پستول حفاظت کیلئے رکھا تھا اسی پستول کے بٹ سے مارا گیا، قتل کی دھمکیاں مل رہی تھیں اسی لئے پولیس کو درخواست دینے گیا۔

غیرت کےنام پرقتل ہونے والی پانچ لڑکیوں کوانصاف دلانےکی خواہش رکھنےوالے مدعی افضل کوہستانی کوایبٹ آبادکےعلاقے گامی اڈاکےقریب  گزشتہ روز فائرنگ کر کے قتل کردیا گیا تھا،وزیر اعلی خیبر پختونخوا نے افضل کوہستانی کے قتل کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی سے رپورٹ طلب کر لی۔

واضح رہے 2012 میں کوہستان ویڈیو سکینڈل سامنےآیا تھا، جس میں ایک شادی کی تقریب میں کچھ لڑکیوں کو رقص کرتے اور تالیاں بجاتے دیکھا جاسکتا تھا، مقامی شخص افضل کوہستانی نےدعویٰ کیاتھاکہ ویڈیومیں نظر آنے والی لڑکیاں کوذبح کرکےقتل کردیاگیا ہے۔

M.SAJID KHAN

CONTENT WRITER