مڈٹرم الیکشن:امریکی صدر ٹرمپ کو عوام نے جھٹکا لگادیا


واشنگٹن ( 24نیوز ) امریکا میں وسط مدتی انتخابات کے نتائج آنا شروع ہوگئے ہیں،امریکی عوام کی اکثریت نے صدر ٹرمپ کی پالیسیاں رد کرتے ہوئے ڈیموکریٹ پارٹی کو ووٹ دیئے جس نے ایوان نمائندگان میں اکثریت حاصل کر لی ہے، ڈیموکریٹ پارٹی نے ایوان نمائندگان میں ری پبلکنز سے 26 نشستیں چھین لی ہیں اور ری پبلکنز کا آٹھ سالہ راج ختم کرکے اپنی حکمرانی قائم کرلی ہے۔
ایوان نمائندگان میں ڈیموکریٹک پارٹی کو 213 اور ری پبلکن کو 196 نشستوں پر برتری مل گئی ہے،دوسری طرف امریکی سینیٹ میں ری پبلکنز کا راج برقرار رہا جہاں ری پبلکن پارٹی کو 51 جبکہ ڈیموکریٹس کو 46 سیٹیں حاصل ہوئیں،ریاستوں کے 36 گورنرز کے انتخابات میں ری پبلکنز کو 25 اور ڈیموکریٹس کے 21 نشستوں پر کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ گورنرز کے الیکشن میں بھی ری پبلکنز کی 6 نشستیں ڈیموکریٹس کے پاس چلی گئی ہیں۔
صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے الیکشن میں پارٹی کی خراب کارکردگی کے باوجود ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ ا?ج رات شاندار فتح حاصل ہوئی، آپ سب کا شکریہ۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وسط مدتی انتخابات میں کامیابی کا دعویٰ کردیا،ان کا کہنا تھا جو کامیابی ملی ہے اس پر بہت خوش ہوں۔

دوسری جانب امریکا کے تحقیقی ادارے پیو ریسرچ سینٹر کے مطابق امریکا کی موجودہ 115 کانگریس نسلی اور صنفی اعتبار سے امریکی تاریخ کی سب سے زیادہ متنوع کانگریس ہے جس میں کانگریس کے دونوں ایوانوں میں خواتین ارکان کی تعداد تاریخ کے مقابلے میں سب سے زیادہ ہے۔
امریکی سینیٹ اور ایوان نمائندگان میں اقلیتوں اور خواتین کا تناسب 20 فیصد کے لگ بھگ ہے تاہم، توقع ہے کہ وسط مدتی انتخابات کے بعد دونوں ایوانوں میں خواتین ارکان کی تعداد مزید بڑھ جائے گی، اس کی وجہ یہ ہے کہ 200 سے زائد خواتین امیدوار ایوان نمائندگان کی نشستوں کیلئے انتخاب لڑ رہی ہیں۔
سینیٹ کی کل 100 نشستوں میں سے 51 رپبلکن، 47 ڈیموکریٹ اور دو آزاد ارکان شامل ہیں، جبکہ ایوان نمائندگان کی کل سیٹوں کی تعداد 435 ہے، ان میں رپبلکن پارٹی کے ارکان کی تعداد 236 ہے جبکہ ڈیموکریٹک پارٹی کے 193 ارکان ہیں اور باقی 6 نشستیں خالی ہیں۔
سینیٹ اور ایوان نمائندگان میں خواتین ارکان کی کل تعداد 112 ہے جو تناسب کے اعتبار سے کل تعداد کا 20.7 فیصد بنتی ہے، سینیٹ میں مرد ارکان 77 ہیں جبکہ خواتین سینیٹرز کی تعداد 23 ہے،ایوان نمائندگان 351 مرد اور 84 خواتین ارکان پر مشتمل ہے۔