" منشیات کیس جھوٹا اور فراڈ ہے"



لاہور( 24نیوز ) منشیات برآمدگی کیس میں راناثنااللہ لاہور کی انسداد منشیات عدالت میں پیش کیا گیا، جج کی چھٹی پر راناثنا اللہ کی حاضری لگا کر سماعت 14 ستمبر تک ملتوی کردی ۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیرقانون رانا ثنا اللہ کےخلاف منشیات مقدمے کی سماعت کرنے والے جج کی عدم دستیابی پرانکے جوڈیشل ریمانڈ میں مزید توسیع کر دی گئی،مسلم لیگ ن کے رہنما رانا ثنااللہ اور دیگرشریک ملزموں کوانسداد منشیات کی عدالت میں پیش کیا گیا،خصوصی عدالت کے جج مسعود ارشد کی تبدیلی کی وجہ سےرانا ثناءاللہ کے مقدمے پر کوئی کارروائی نہ ہو سکی۔

گزشتہ سماعت پر رانا ثنا اللہ کی درخواست ضمانت پر جزوی دلائل ہوئے تھے جبکہ اے این ایف کے وکیل نے دلائل دینے ہیں، جج کی عدم دستیابی کی وجہ سے کارروائی نہ ہو سکی، اے این ایف کی رانا ثنا اللہ کےاثاثے منجمند کرنے کی درخواست پر بھی کوئی پیش رفت نہ ہوئی, عدالت نےرانا ثنا اللہ کےجوڈیشل ریمانڈ میں 14 ستمبر تک توسیع کر دی گئی۔

عدالت میں رانا ثنا اللہ کی اہلیہ اور احسن اقبال سمیت دیگر ن لیگی اراکین اسمبلی نے ان سے ملاقات کی,رانا ثناء اللہ کا کہنا تھا کہ ظلم کی رات جلد ختم ہونے والی ہے،انکے خلاف الزامات بے بنیاد ہیں،رانا ثناء اللہ کاکہنا ہےکہ حکومت نے انتقامی سیاست کے سواکوئی کام نہیں کیا، منشیات کیس جھوٹا اور فراڈ ہے۔