ہر دلعزیز ڈھولچی ارشما کیا بننا چاہتی تھیں؟


لاہور (24 نیوز) نازک کلائیاں، گلے میں ڈھول اور دے دھنا دھن۔لاہور کی ارشما مریم جب ڈھول بجاتی ہیں تو انگ انگ میں تھرتھراہٹ ہوتی ہے اور ناچنے کو جی چاہتا ہے۔ ارشما نے پاکستان میں تو خود کو منوا لیا اب دنیا بھر میں اپنی شہرت کے جھنڈے گاڑ رہی ہیں۔

ایک دور تھا جب مرد ڈھول بجاتے تھے اور عورتیں صرف ڈھولک۔ کبھی کوئی صنف نازک ڈھول بجائے گی، یہ کسی کے گمان میں نہیں تھا۔ اور پھر یوں ہوا کہ ارشما آئی۔ وہ آئی اور چھا گئی۔

یہ بھی پڑھیں: 2 دن جیل کاٹنے کے بعد سلمان خان پر نئی مصیبت ٹوٹ پڑی

ارشما مریم بننے چلی تھیں گلوکارہ اور بن گئی ڈھولچی، لیکن گلوکاری کا جوش ابھی زندہ ہے۔ ارشما چاہتی ہیں کہ جس طرح گلوکار گٹار یا پیانو کی دھن پر گاتے ہیں، وہ ڈھول کی تھاپ پر گائیں۔

ارشما اپنی نازک کلائیوں سے جب ڈھول بجاتی ہے تو دھرتی تھر تھر کانپتی ہے۔ ان کے ڈھول کی تھاپ پہ پہلے سارا پاکستان ناچا اب دنیا ناچ رہی ہے۔

پڑھنا نہ بھولیں: کپتان کی خواہش، خواتین نے ’آئی لو یو عمران خان‘ کے نعرے لگا دیئے

ارشما مریم بھارت، چائنہ اور دیگر ممالک میں بھی اپنے فن کا مظاہرہ کر چکی ہیں اور کررہی ہیں۔

مزید اس ویڈیو میں: