پاکستان نے چینی کی برآمد سے متعلق بڑا فیصلہ کر لیا

پاکستان نے چینی کی برآمد سے متعلق بڑا فیصلہ کر لیا


 اسلام آباد (24 نیوز) وفاقی حکومت نے چینی کی برآمد پر عائد پابندی مستقل بنیادوں پر ختم کرنے کی سفارش کردی۔ چینی کا ذخیرہ ملکی ضرورت سے 30 لاکھ ٹن زیادہ ہے، مشترکہ مفادات کونسل چینی کی برآمد کا معاملے پر فیصلہ کرے۔

 

وفاقی حکومت نے چینی کی برآمد پر پابندی ختم کرنے کی سفارش تیار کرلی ہے۔ حکومت نے چینی کی برآمد پر پابندی مستقل بنیادوں پر ختم کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ چینی کی برآمد پر پابندی اٹھانے کی تجویز مشترکہ مفادات کونسل میں پیش کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ وزارت تجارت نے مشترکہ مفادات کونسل کے لیے سمری تیار کرلی۔

 

وزارت تجارت کا کہنا ہے کہ ملک میں چینی کا اسٹاک ضرورت سے زیادہ ہے، رواں سال چینی کی پیداوار ضرورت سے 30 لاکھ ٹن سے زیادہ ہے۔ گنے کی پیداوار روکنے کے لیے صوبائی حکومتیں کردار ادا کریں کپاس کے پیداواری علاقوں میں گنے کی شوگر ملز لگائی جارہی ہیں گنے کی پیداوار بڑھنے سے کپاس کی پیداوار میں 50 لاکھ بیلز تک کمی واقع ہورہی ہے۔ وفاقی حکومت چینی کی برآمد پر مستقل سبسڈی دینا بند کرے وفاقی حکومت 30 جون 2018 کے بعد چینی کی سبسڈی ختم کردے۔

 

وزارت تجارت کا کہنا ہے کہ مشترکہ مفادات کونسل چینی کی برآمد کا جائزہ لے۔