پنجاب حکومت کے اداروں سے84 ارب کا پوچھا جائے تو کہتے ہیں سازش ہو رہی ہے: چیئرمین نیب


اسلام آباد (24 نیوز) چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ پنجاب کے ادارے تعاون نہیں کر رہے۔ 84 ارب کا پوچھا جائے تو کہتے ہیں سازش ہو رہی ہے۔

جسٹس (ر) جاوید اقبال کا اظہار تشویش کرتے ہوئے کہنا تھا کہ کچھ ادارے خاص طور پر میں پنجاب حکومت کے اداروں کی بات کر رہا ہوں، جن سے عدم تعاون کی شکایت ہے۔ 84 ارب کے حوالے سے سوال کیا جائے تو کہتے ہیں کہ سازش ہو رہی ہے۔

پڑھنا نہ بھولئے:بلاول بھٹو نے امریکی نیوز چینل کے اینکر کو خاموش کرا دیا

انھوں نے کہا کہ کے آپ سے پوچھے بغیر میں ہر وہ قدم اٹھاؤں گا اور اٹھا رہا ہوں جو لوگوں کی بہبود کے لیے ہو گا۔ بیوروکریسی کسی شخص کے اشاروں پر نہیں ناچ سکتی ہے لیکن نیب نہیں۔

یہ بھی پڑھئے:کراچی موٹروے ٹھیکوں میں کرپشن، ’چیئر مین نیب‘ کا تحقیقات کا حکم

چیئرمین نیب نے واضح کیا کہ بڑے بڑے لوگوں کو احتساب کے کٹہرے میں لا کھڑا کیا۔ نیب کا کسی سیاسی جماعت سے کوئی تعلق نہیں۔ عدم تعاون اب تک ’سمائلنگ فیس‘ سے برداشت کیا لیکن اب نہیں کروں گا۔