46ممالک کی مشترکہ امن مشقیں کراچی میں شروع



کراچی(24 نیوز)46 ممالک کی مشترکہ امن مشقیں کراچی میں شروع ہوچکی ہیں،افتتاح تقریب میں اہم شخصیات شریک،پاک بحریہ کے سربراہ ایڈمرل ظفر محمود عباسی نے کہا ہے کہ  امن مشق علاقائی اور عالمی بحری امن و استحکام کی ضامن ہیں۔

پاکستان سمیت 46 ممالک کے پرچم لہرانے کی تقریب کے مہمان خصوصی کمانڈر پاکستان فلیٹ وائس ایڈمرل امجد خان نیازی تھے،تقریب میں پاکستان آرمی اور پاک فضائیہ کے افسران نے  بھی شرکت کی ہے۔ مشقوں کےموقع پر پاک بحریہ کے سربراہ ایڈمرل ظفر محمود عباسی نے خصوصی پیغام میں کہا ہے کہ  مشقوں میں عالمی بحری افواج مشترکہ آپریشنز اور تجربات کا تبادلہ کرتی ہیں، بحریہ 8 تا 10 فروری " ہاربر فیز " ، 11اور 12 فروری کو "سی فیز " ہوگا، کمانڈر پاکستان فلیٹ امن مشق ہر دو سال بعد باقاعدگی کے ساتھ منعقد کی جاتی ہے ، بحریہ پاک بحریہ 2007 سے کثیرالملکی امن مشقوں کی میزبانی کررہی ہے ۔

ترجمان پاک بحریہ  کے مطابق پاک بحریہ کے سر براہ نے کہا کہ یہ مشق میری ٹائم تعاون اور محفوظ میری ٹائم ماحول کے فروغ کیلیے اہم ہے، عالمی بحری افواج امن کے حصول کی غرض سے ایک پلیٹ فارم پر جمع ہوتی ہیں ، امن مشق علاقائی اور عالمی بحری امن و استحکام کی ضامن ہے ، جدید دور کےچیلنجز کا تقاضا ہے کہ مل کر مقابلے کیےجائیں۔

'امن مشق 2019' کے حوالے سے میڈیا کو بریفنگ کے دوران ایک سوال کے جواب میں کمانڈر پاکستان فلیٹ وائس ایڈمرل امجد خان نیازی نے کہا کہ بھارت کی عمان، چاہ بہار، موریشس اور مالدیپ میں بندرگاہوں پر سرگرمیوں کو مانیٹر کیا جارہا ہے، بھارتی بحریہ عمان کی پورٹ کے ساتھ جبکہ بحرہند ،گلف آف عمان، انڈونیشین ریجن جبکہ مناکا اسٹیٹ میں اپنی موجودگی ظاہر کر رہی ہے، ہم چاہ بہار اور دکم کے منصوبوں کو دو ملکوں کے درمیان صرف حالت امن کے تناظر میں دیکھ رہے ہیں جبکہ حالت جنگ میں جغرافیائی صورتحال یکسر تبدیل ہوجاتی ہے۔

کمانڈر پاکستان فلیٹ نے کہا کہ ہم بھارت کے ساتھ معاہدہ کرنے والے ملکوں سے بھی مثبت توقع رکھتے ہیں کیونکہ ہم کبھی بھی یہ نہیں چاہیں گے کہ اسلامی ممالک کے ساتھ اس معاملے پر دوریاں پیدا ہو۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer