سکردو کی باہمت خاتون دنیا کیلئے مثال بن گئی


سکردو(24نیوز)آج دنیا بھر میں خواتین کا عالمی دن منایا جارہا ہے ،پاکستان سمیت دینا بھر میں خواتین کے حقوق کیلئے آگاہی واکس،سیمینارز کا اہتمام کیا جارہا ہے،نجی و قومی ٹی وی چینلز پر مختلف پروگرامت پیش کیے جارہے ہیں جبکہ قومی و مقامی اخبارات خصوصی ایڈیشنز کے ساتھ مزین ہیں،ایسے موقع پر سکردو سے تعلق رکھنے والی باہمت خاتون محمودہ محمود نے تنگ دستی کو خوشحالی میں بدلنے کے لیے کاربار شروع کر لیا ہے،آج محمودہ نہ صرف ایک کامیاب خاتون ہیں بلکہ وطن عزیز کی ماوں بہنوں کے لیے ایک بہترین رول ماڈل بھی ہیں۔
سکردو سے تعلق رکھنے والی 49 سالہ خاتون محمودہ پانچ بچوں کی ماں ہیں۔محمودہ نے اپنے شوہر کی مالی تنگ دستی کو دیکھتے ہوئے ان کا ہاتھ بٹانے کی ٹھان لی۔شوہر کی کمائی بہت کم تھی،اخراجات پورے ہونے مشکل ہوئے تو محمودہ نےروایات، اورخودساختہ جبری قوانین کی زنجیر توڈ کر عملی میدان میں آکر کاربار شروع کر لیا۔ ابتداء میں ان کے اپنے انہیں طعنہ دینے لگے۔جملے کسے گئے۔اور مذاق بھی اڑایا گیا۔لیکن محمودہ نےاپنوں کی طرف سے پھینکے گئے تیروں کے نشتروں کی پروا نہ کی۔ ابتداء میں دو سلائی مشینوں کی مدد سے کاربار کا آغاز کیا۔

مشال ملک کا پیغام۔۔ویڈیو دیکھیں

یہ بھی پڑھیے۔۔۔۔معروف گلوکار راحت فتح علی خان ”کنگال“ہوگئے
آج محمودہ ایک فنی سنٹر کی مالک ہیں۔ اوران کی اپنی دوکان اور بیوٹی پالر بھی ہے۔محمودہ کے فنی سنٹر میں طلباءکو کمپو ٹر، سالائی کڑاھائی ، اور انگلش لینگولج کی تربیت دی جاتی ہے۔ اب تک اس ادارے سے 7000 سے زائد افراد فنی تربیت لے چکے ہیں۔
محمودہ جہاں ایک کامیاب تاجر ہیں وہی ایک بہترین گریلو خاتون بھی ہیں۔انہوں نے کاربار کے ساتھ ساتھ اپنے بچوں کی بہترین تربیت بھی کی ہے۔وہ گھر کے کام کاج وقت پہ کرتی ہیں۔ کھانا پکانا، برتن دھونا، اور کپڑے دھونا ان کے پسندیدہ مشاغل ہیں۔محمودہ کے بچے بھی اپنی ماں کو اپنا رول ماڈل مانتے ہیں ۔


محمودہ مستقبل قریب میں ایک بڑا فنی ادارہ قائم کرنے کی خواہاں ہیں۔محمودہ کا کہنا ہے کہ ابھی ان کی کامیابیوں کا آغاز ہے۔ وہ جہد مسلسل سے دنیائے کاربار میں اپنا لوہا منوانا چاہتی ہیں ،خواتین کی ترقی میں نمایاں کردار ادا کرنے اور معاشی شعور دینے پر مختلف سماجی تنظیوں نے انہیں ایواڈز سے بھی نوازا ہے۔

یہ بھی پڑھیے۔۔۔۔پی آئی اے کی پرواز میں ایئر ہوسٹس کے ٹھمکے، دوران پرواز ڈانس کرتی رہیں
محمودہ جیسی باہمت اور اپنے کام سے محبت کرنیوالی خواتین کی خدمات کے اعتراف میں لاہور کی یونیورسٹی آف سنٹرل پنجاب میں پاکستان فیڈرل یونین آف کالمسٹ نے ایوار ڈ شو کا اہتمام کیا جس میں سابق گورنر پنجاب،سینیٹر چوہدری محمد سرور ،رہنماءجماعت اسلامی ڈاکٹر سمیحہ راحیل قاضی،سابق وزیر تعلیم میاں عمران مسعود ،تجزیہ کار مجیب الرحمان شامی ، بیگم مہناز رفیق ، مسرت مصباح، نورالہدیٰ نے بطور مہمان خصوصی خواتین کو خراج تحسین پیش کیا۔


تقریب کی صدارت صدر پی ایف یو سی راجہ وحید خان، صدر ویمن ونگ ڈاکٹر عارفہ صبح خان نے مشترکہ طور پر کی ،دبنگ گورنمنٹ آفیسر عائشہ ممتاز،نوجوان صحافی ثمن عروج،ایم پی اے پی ٹی آئی ڈاکٹر نوشین حامد ،شاعرہ و ادیب یاسمین حمید،پبلک ریلیشنز آفیسر حفصہ جاوید ،نوجوان لکھاری سندس گل ،گھر فاو¿نڈیشن کے سید علی عمران،شاعرہ ثمینہ گل ،غزالی پبلک سکول کے ڈائریکٹر سید عامر جعفری اورحلیمہ آفریدی کو ایوارڈ پیش کیے گئے۔جنرل سیکرٹیری رضوان اللہ خان نے سٹیج سیکرٹری کی خدمات سرانجام دیں، پروگرام کی کامیابی کا سہرا جوائنٹ سیکرٹری اظہر تھراج ،انفارمیشن سیکرٹری قاسم علی ،شہزادروشن گیلانی،رانا علی زوہیب ،حافظ زاہد و دیگر کے سرجاتا ہے۔
یاد رہے اقوام متحدہ کے سالانہ کیلنڈر کے تحت ہر سال آٹھ مارچ کو خواتین کا عالمی دن منایا جاتا ہے،11مارچ کو لاہور کے مقامی ہوٹل میں خواتین کی بین الاقوامی کانفرنس بھی منعقد ہورہی ہے۔

اظہر تھراج

صحافی اور کالم نگار ہیں،مختلف اخبارات ،ٹی وی چینلز میں کام کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں