نواز شریف نے عدالت سے نکلتے ہی بڑا اعتراف کرلیا


اسلام آباد(24نیوز )چیئرمین سینیٹ کا انتخاب کیلئے حکومت اور اپوزیشن میں نوراکشتی جاری ہے،دھمکیوں،گالیوں سے بات منتوں تک آن پہنچی ہے،سیاسی جوڑ توڑ جاری ہے ،سابق وزیر اعظم نواز شریف اپنے اتحادیوں سے ملاقات کررہے ہیں توسابق آصف علی زرداری بھی سکون سے نہیں بیٹھے ہیں وہ بھی اپنے پسندیدہ چیئرمین کے انتخاب کیلئے ہاتھ پاﺅں مار رہے ہیں ۔
سابق صدر آصف زرداری نے گزشہ روز مولانا فضل الرحمان سے ملاقات کی ان سے حمایت مانگی ہے،مولانا سے ان کی ملاقات تو خوشگوار تھی لیکن ابھی تک اس کا نتیجہ سامنے نہیں آیا ہے۔
یاد رہے ایوانِ بالا یعنی سینیٹ میں اس مرتبہ جماعت مسلم لیگ ن کے حمایت یافتہ15 امیدوار کامیاب ہوئے ہیں اور ان آزاد امیدواروں کی مسلم لیگ ن میں باقاعدہ شمولیت کے بعد وہ سینیٹ کی سب سے بڑی جماعت بن سکتی ہے،مسلم لیگ نواز کے پہلے سے 18 اراکین موجود ہیں اور نئے اراکین کی شمولیت کے بعد سینیٹ میں مسلم لیگ نواز کی مجموعی تعداد 33ہو گئی ہے۔ان انتخابات سے قبل سینٹ کی سب سے بڑی جماعت پاکستان پیپلز پارٹی سینیٹ دوسری نمبر پر چلی گئی ہے تاہم وہ اعدادوشمار کے برعکس کہیں زیادہ نشستیں حاصل کرنے میں کامیاب ہوئی ہے، اس کے پرانے اراکین کی تعداد آٹھ تھی اور اب 12 نئے امیدوار کی جیت کے بعد سینیٹ میں ان کی مجموعی تعداد 20 ہو گئی ہے-

پاکستان تحریک انصاف کی سینیٹ میں مجموعی نشستیں 12 ہو گئی ہیں جبکہ ان انتخابات میں ایم کیو ایم صرف ایک نشست لینے میں کامیاب ہوئی ہے،جے یو آئی ( ف)اور جماعت اسلامی نے ایک نشست اپنے نام کی ہے،فاٹا اور بلوچستان کے آزاد سینیٹرز اس وقت حکومت اور اپوزیشن دونوں کیلئے بہت اہمیت اختیار کرچکے ہیں،یہ چیئرمین سینیٹ کے انتخاب میں بھرپور کردار ادا کرسکتے ہیں۔
سابق وزیراعظم نے احتساب عدالت سے نکلتے ہی میڈیا سے گفتگو کی انہوں نے کہا ہے کہ ہارس ٹریڈنگ سے متعلق قانون سازی ہونی چاہیے جس کے لیے ہم تیار ہیں، بلوچستان میں دو تین ماہ پہلے ہی ہارس ٹریڈنگ شروع ہو گئی تھی جو ایک بری ریت ہے اور اس کا سد باب ہونا چاہیے، ہم سینیٹ میں واحد اکثریتی جماعت ہیں اور ہمارا حق ہے کہ اپنا امیدوار دیں، مولانا فضل الرحمان، محمود اچکزئی اور حاصل بزنجو کو ملا کر اچھی تعداد بن جاتی ہے۔
اسلام آباد کی احتساب عدالت کے کمرے میں میڈیا کے نمائندوں سے غیر رسمی بات کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ رضا ربانی اپنا کام اچھے طریقے سے کرتے ہیں اور موزوں آدمی ہیں، ابھی ایک ہارس ٹریڈنگ کا عملی نمونہ دیکھا اور رضا ربانی کا بطور چیئرمین سینیٹ نام اس لیے دیا کہ اگلی ہارس ٹریڈنگ کو روکا جائے۔
صحافی نے سوال کیا کہ مولانا فضل الرحمان کی تو آصف زرداری سے کافی دوستی ہے جس پر انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان ہمارے بھی بڑے دوست ہیں۔

اظہر تھراج

صحافی اور کالم نگار ہیں،مختلف اخبارات ،ٹی وی چینلز میں کام کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں