امریکا نےایران پر حملے کی تیاریاں کرلیں؟

امریکا نےایران پر حملے کی تیاریاں کرلیں؟


تہران( 24نیوز ) امریکا نے بحری بیڑے کے بعد بی ون بمبار طیارے بھی خلیج میں بھیج دیئے، دوسری طرف ایران کا کہنا ہے کہ وہ جوہری معاہدے سے علیحدہ ہوتے ہی یورینیم کی افزودگی شروع کردے گا۔

تفصیلات کے مطابق  امریکا نے بحری بیڑے کے بعد بی ففٹی ٹو بمبار طیارے بھی خلیج روانہ کردیے ہیں،ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف کا کہنا تھا کہ مشرق وسطیٰ میں امریکا کےسیکورٹی تحفظات کا اصل سبب ایران نہیں, مشرق وسطیٰ میں امریکی بحری بیڑے کی تعیناتی کی خبروں پر جوادظریف نے کہاکہ امریکا اور اس کے نمائندے اپنے آپ کو محفوظ نہیں سمجھتے تو اس کی وجہ ان کی لوگوں میں غیر مقبولیت ہے، سیکورٹی تحفظات کےلیےایران کو ذمہ دار ٹھہرانےسےحقیقت نہیں بدلے گی.

امریکانے بحری بیڑے کے بعد بی ففٹی ٹو بمبار طیارے بھی خلیج روانہ کردیے، جوہری صلاحیت کے حامل کئی بمبار طیارے اور دیگر بحری جنگی جہاز مشرق وسطیٰ میں تعینات کیے جارہے ہیں امریکی وزیردفاع پیٹرک شن ہان کا کہنا تھا کہ امریکی افواج اور مفادات پر ایرانی حملوں کے ممکنہ خطرے کے پیش نظر جنگی بحری بیڑے کو خلیج بھیجا گیا ہے۔

 ترجمان پنٹاگون نے وائٹ ہاؤس کی اس وضاحت کو دہرایا کہ امریکا ایران سے جنگ نہیں چاہتا، تاہم امریکی فوج، اتحادیوں اور خطے میں اپنے مفادات کا بھرپور دفاع کرے گا، امریکا نے ایران سے درپیش خطرے کی تفصیل نہیں بتائی۔