آئی ایم ایف اپنی شرائط پرڈٹ گیا، حکومت نے بھی گھٹنے ٹیک دیئے

آئی ایم ایف اپنی شرائط پرڈٹ گیا، حکومت نے بھی گھٹنے ٹیک دیئے


اسلام آباد(24 نیوز) آئی ایم ایف اپنی شرائط پرڈٹ گیا،  بجٹ میں سات سوارب روپے کے اضافی ٹیکسز لگانے کی شرط رکھ دی، پاکستان نے بھی گھٹنے ٹیک دیئے۔ بجلی اورگیس کی قیمتیں بڑھانے کی یقین دہانی کرادی۔صارفین سےتین سال میں340ارب روپے وصول کیے جائیں گے۔

 پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات جاری ہیں۔ آئی ایم ایف نے ٹیکس شرائط سے پیچھے ہٹنے سے انکار کردیا اورقرض دینے کیلئے بجٹ میں 700 ارب روپے کے اضافی ٹیکس لگانےکی شرط رکھ دی۔ یہی نہیں یہ ٹیکس اکٹھاکیسےکرناہے، اس کاپلان بھی مانگ لیاگیا ہے۔ ذرائع کاکہنا ہے کہ آئی ایم ایف، ایف بی آرکاٹارگٹ5000ارب روپے سے زائدمقررکرنا چاہتا ہے۔

آئی ایم ایف وفدنےپاور سیکٹر کے حکام سے ملاقاتیں کیں جن میں کئی اہم معاملات پر اتفاق ہوگیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومتی مذاکراتی ٹیم نے آئی ایم ایف کوبجلی و گیس کی قیمتوں میں اضافے کی یقین دہانی کرا دی ہے۔ بجلی اورگیس کی مدمیں۔340 ارب روپے تین سال میں صارفین کی جیبوں سے نکالے جائیں گے۔حکومت اوگرا اورنیپرا کوقیمتوں کے تعین کیلئےخودمختار بنانے کے لیے بھی رضا مند ہوگئی، تین سال میں چھوٹے صارفین کے علاوہ سب کی سبسڈی ختم ہوگی جب کہ صنعتی صارفین کومحدودسبسڈی دی جائے گی۔