مسلم لیگ ن کا احتجاج


لاہور( 24نیوز ) پاکستان مسلم لیگ ن کا اجلاس ختم ہوگیا،اجلاس کے رہنماﺅں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف کی گرفتاری انتقامی کارروائی ہے کل سے حکومت کیخلاف احتجاج شروع کرینگے۔

ن لیگی رہنما رانا ثنا ءاللہ نے کہا ہے کہ عمران خان کو اپنے اردگرد قبضہ گروپ نظر نہیں آرہے،شہباز شریف کیخلاف بغیر ثبوتوں کے کارروائی ضمنی الیکشن پر اثر انداز ہونے کی کوشش ہے،احتجاج کیلئے پیپلز پارٹی او ر مولانا فضل الرحمان سے بات کرینگے۔

سابق وزیر اعظم نواز شریف سیاست میں پھر فعال،اجلاس شروع

سابق وزیر اعظم نواز شریف ایک بار پھر ملکی سیاست میں فعال ہوگئے،مسلم لیگ ن کی سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کااجلاس ماڈل ٹاﺅن سیکرٹریٹ میں شروع ہوگیا ہے، سابق وزیراعظم نوازشریف ماڈل ٹاون لاہورمیں اجلاس کی صدارت کررہے ہیں، شہبازشریف کی گرفتاری کے بعدکی صورتحال کاجائزہ لیا جا رہا ہے۔
پارٹی رہنماو¿ں کواعتماد میں لینے کے بعد اپوزیشن جماعتوں سے مشاورت ہوگی،حکومتی اقدامات ،سیاسی انتقامی کاروائیوں کیخلاف حکمت عملی تیار کی جائےگی،وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر، سردار ایاز صادق اور امیر مقام پہنچ گئے،سابق وفاقی وزیر قانون زاہد حامد ، رانا تنویر حسین ماڈل ٹاو¿ن پہنچ گئے ۔
ن لیگی رہنما ڈاکٹر آصف کرمانی نے اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ حکومت پی ٹی آئی کی نہیں بلکہ جیرا بلیڈ کی ہے،عوام کو ریلیف دینے کے بجائے تکلیف دی جارہی ہے۔
سینئر سیاستدان جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ جب بھی ملک ترقی کرنے لگتا ہے نیب کو احتساب یاد آجاتا ہے،سیاستدانوں کیخلاف مقدمات کھول دئیے جاتے ہیں۔