حکومت کا آئی ایم ایف سے قرضہ لینے کا فیصلہ


اسلام آباد(24نیوز) وزیراعظم عمران خان کابڑایوٹرن، اپنے جلسوں میں قوم کویقین دلاتے رہےکہ وہ آئی ایم ایف سے قرض نہیں لیں گے لیکن اب انہوں نےآئی ایم ایف سے قرض لینے کی منظوری دے دی ہے۔

ناں ناں کرتے تحریک انصاف حکومت نے بھی آئی ایم ایف سے قرض لینے کے لیے ہاں کر دی۔ وفاقی حکومت نے قرض کیلئے آئی ایم ایف سے رجوع کرنے کا فیصلہ کر لیا، وزیراعظم عمران خان سے وزیر خزانہ اسد عمر نے وزیراعظم ہاؤس میں ملاقات کی، جس میں آئی ایم ایف کے پاس جانے کے حوالے سے کپتان کو بریفنگ دی گئی، عمران خان نے وزارت خزانہ کی تجاویز پراتفاق کرتے ہوئے آئی ایم ایف سے مذاکرات کی منظوری دے دی۔

وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے اپنے ویڈیو بیان میں کہا کہ کوشش ہے کہ عام آدمی پر مشکل فیصلوں کا اثر کم سے کم پڑے،کسی گروہ یا فرد کی بہتری کے لیے سخت فیصلے نہیں کیے،انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف سے فوری مذاکرات شروع کیے جا رہے ہیں، آئی ایم ایف سے ایسا پروگرام لینا چاہتے ہیں جس سے معاشی بحران پر قابو پایا جا سکے۔ 

پاکستانی وفد چودہ اگست تک انڈونیشیا کے شہربالی میں آئِی ایم ایف اورورلڈ بینک کے سالانہ اجلاس میں شرکت کرے گا جہاں وزیر خزانہ اسد عمرآئی ایم ایف پروگرام اور درپیش چینلجز پر بات چیت کریں گے۔ ذرائع وزارت خزانہ کے مطابق پاکستان اس سال کے آخر تک آئی ایم ایف سے قرض دینے کی درخواست کرے گا۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔