سانحہ سیہون بم دھماکہ میں پولیس افسران کےملوث ہونے کا انکشاف

سانحہ سیہون بم دھماکہ میں پولیس افسران کےملوث ہونے کا انکشاف


 کراچی (24 نیوز) سانحہ سیہون بم دھماکہ کے سہولت کار اور پولیس کے افسروں کا گٹھ جوڑ سامنے آگیا، گرفتار ملزم صابر عرف دودھ والانے تفتیش میں ہوشربا انکشافات کردیئے۔

تفصیلات کے مطابق گرفتار ملزم صابر عرف دودھ والا نے انٹیروگیشن رپورٹ میں پولیس اہلکاروں کے نام بتا دیے۔ رپورٹ کے مطابق پولیس کے افسران صابر عرف دودھ والا کی سپورٹ کرتے تھے۔ افسران میں ڈی ایس پی جاوید ملک ، پولیس انسپکٹر منصور، نوید علی، طارق خالد، شکور ، بہزاد اور خالد شامل ہیں۔

رپورٹ میں مزید بتاگیا ہے کالعدم تنظیم کے کارندے کو تحقیقاتی افسر باغ علی اور طارق خالد کی سپورٹ بھی حاصل تھی، ایس ایس پی ویسٹ ڈاکٹر رضوان کا دعویٰٰ ہے کے ملزم نے کالعدم تنظیم کے کمانڈر سمیت دو ساتھیوں کو سیہون دھماکے سے دو روز قبل گھر میں پناہ دی تھی، ملزم نے پولیس کے سامنے اعتراف کیا ہے کے سانحہ سے ایک روز قبل دہشت گرد صبح ہوتے ہی نکل گئے تھے۔

یاد رہے گرفتار ملزم صابر عرف دودھ والا قتل، اغوا برائے تاوان، ڈکیتی ، گینگ ریپ، قبضہ مافیا، بھتہ خوری  جیسے جرائم میں بھی ملوث رہا ہے، ملزم کے اعترافی بیان پر مبنی انٹیروگیشن رپورٹ آئی جی سندھ کو بھجوا دی گئی ہے۔