پنجاب کے متوقع وزیر اعلیٰ کا نام سامنے آگیا

پنجاب کے متوقع وزیر اعلیٰ کا نام سامنے آگیا


لاہور( 24نیوز )پی ٹی آئی چیئرمین اور نامز د وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے پنجاب کے نئے وزیر اعلیٰ کے بارے میں بھی اشارہ دے دیا۔
عمران خان کے اشارے کے مطابق متوقع وزیرِاعلیٰ پنجاب راجہ یاسر ہمایوں سرفراز ہوسکتے ہیں، ہمایوں سرفراز راجہ چکوال کے حلقہ پی پی 21سے ایم پی اے منتخب ہوئے ہیں،انہوں نے ابتدائی تعلیم چکوال سے حاصل کی پھر ایچی سن کالج لاہور کے بعد امریکہ چلے گئے جہاں کمپیوٹر انجینئرنگ اور پولیٹیکل سائنس میں یونیورسٹی آف فلوریڈا سے گریجوایشن کیا، یونیورسٹی آف فلوریڈا میں 1992ءمیں پاکستان سٹوڈنٹس ایسوسی ایشن کے صدر رہے۔ پھر انٹرنیشنل سٹوڈنٹس ایسوسی ایشن کے صدر اور پھر سینئر سٹوڈنٹس باڈی کے صدر رہے، یہ پہلے ایشیائی تھے جنہیں یہ اعزاز حاصل ہوا۔
پنجاب میں بڑے پیمانے پر قانون سازی کی ضرورت ہے اور یہ وہ کام ہے جو ان سے بہتر کوئی نہیں کر سکتا،راجہ یاسر ہمایوں سرفراز کا تعلق پاکستان تحریک انصاف سے ہے انہوں نے اپنی عملی سیاست کا آغاز 2013ء کے انتخابات سے محض تین ماہ قبل کیا اور قومی اسمبلی کے موجودہ حلقے این اے64سے پاکستان تحریک انصاف کے ٹکٹ پر تقریبا48ہزار ووٹ لیتے ہوئے سیاسی حلقوں کو حیران کر دیا۔ 

                                                                                                             وزیر اعلیٰ پنجاب کیلئے پی ٹی آئی کے متوقع امیدوار کی پارٹی جلسے کے دوران لی گئی تصویر

2018ءکے عام انتخابات میں وہ حلقہ پی پی21سے 77425ووٹ لے کر کامیاب ہوئے۔ انہوں نے اپنے مدمقابل پاکستان مسلم لیگ ن کے چوہدری سلطان حیدر علی خان کو تقریباً12ہزار ووٹوں کے مارجن سے شکست دی،راجہ یاسر ہمایوں سرفراز کا خاندان 1925سے عملی سیاست میں ہے ان کے دادا راجہ محمد سرفراز خان مرحوم 1929ءمیں چکوال سے بلامقابلہ ممبر لیجسلیٹو اسمبلی(ایم ایل اے) منتخب ہوئے پھر1937ء میں یونینسٹ پارٹی کے ٹکٹ پر منتخب ہوئے۔1942ءمیں مسلم لیگ میں شامل ہوئے اور پھر اپنی وفات 1968ء تک اسی جماعت کا حصہ رہے۔

یہ بھی لازمی پڑھیں۔۔۔  کپتان نے معافی مانگ لی
وہ تحریک پاکستان کا بھی حصہ رہے۔ انگریز دور میں انہیں سماجی خدمات پر متعدد اعزازات بھی ملے۔ لیکن انہوں نے قائداعظم محمد علی جناح کی کال پر وہ تمام اعزازات واپس کر دئیے۔1946ئ کے عام انتخابات میں وہ مسلم لیگ کے ٹکٹ پر منتخب ہوئے اس کے بعد1951سے 1958ء تک ایم ایل اے رہے اور اس کے بعد ملک کے سیاسی حالات سے دلبرداشتہ ہو کر سیاست کو خیرآباد کہہ دیا۔

یہ بھی پڑھیں:   خیبر پختونخوا:عمران خان نے ارب پتی وزیر اعلیٰ نامزد کردیا
راجہ یاسر ہمایوں سرفراز سابق سینیٹر سردار خضر حیات خان مرحوم اور سابق ایم پی اے سردار محمد اشرف خان مرحوم کے عزیز ہیں۔وہ فیصل آباد سے تین مرتبہ ایم پی اے منتخب ہونے والے میجر(ر) سجاد اکبر اور فیصل آباد سے سابقہ صوبائی وزیر راجہ ریاض احمد کے قریبی عزیز ہیں۔راجہ یاسر سرفراز کا خاندان 1970ءکی دہائی میں پاکستان پیپلزپارٹی میں شامل ہوا اور 1985ءکے بعدان کے خاندان کا کوئی بھی فرد کبھی پاکستان مسلم لیگ ن میں شامل نہیں رہا۔
راجہ یاسر سرفراز کو عمران خان نے ملاقات کے دوران سیاست میں آنے کا مشورہ دیا اور انہیں 2013ئ کے عام انتخابات میں پاکستان تحریک انصاف کے ٹکٹ پر الیکشن لڑایا۔راجہ یاسر سرفراز9فروری 2013ءکو پاکستان تحریک انصاف میں باقاعدہ طور پر شامل ہوئے۔