ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی تحلیل کرنے کا معاملہ زور پکڑ گیا



کراچی (24 نیوز) شہرِ قائد کی سب سے بڑی جماعت میں اختیارات کی جنگ حتمی مرحلہ میں داخل ہو گئی۔ رابطہ کمیٹی کے اکثریتی ارکان نے اپنے پارٹی سربراہ کی بالادستی ماننے سے انکارکردیا۔ فاروق ستار نے رابطہ کمیٹی تحلیل کرنے پرغور شروع کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق ایک دوسرے کو بھائی بھائی کہنے والوں نے ایک دوسرے کے خلاف طبل جنگ بجا دیا۔ دونوں طرف سے پارٹی آئین کی من پسند تشریح کی جا رہی ہے۔

عامرخان گروپ نے گزشتہ روز اپنے قانونی دماغ فروغ نسیم کو بھی میدان میں اتار دیا۔ جن کا کہنا تھا کہ متحدہ قومی موومنٹ میں کسی کے پاس ویٹو پاور نہیں۔

ضرور پڑھیں:کھراسچ، 18 جون 2019

فیصل سبزواری بھی خم ٹھونک کر میدان میں آ گئے جنہوں نے فاروق ستار کو جلی کٹی سنائیں۔ جبکہ رؤف صدیقی نے بھی اس لڑائی میں اپنا حصہ ڈالا اور کہا کہ فاروق ستارغلط مؤقف پرڈٹے ہوئے ہیں۔

یہ بھی پڑھئے: مذاکرات نہیں، سربراہ ہونیکی حیثیت سے اجلاس کی صدارت کرونگا،فاروق ستار

فاروق ستارنے جوابی وارکیا اور دوٹوک انداز میں سب پر واضح کر دیا کہ پارٹی سربراہ کی مرضی کے بغیر کسی کو پارٹی ٹکٹ جاری نہیں ہو سکتا۔

ذرائع کے مطابق ایم کیو ایم کے دونوں دھڑوں میں معاملات اس مقام پر پہنچ چکے ہیں جہاں سے کسی کے لیے واپسی آسان نہیں ہو گی۔ ایک دھڑا دوتہائی اکثریت سے پارٹی سربراہ بدلنے کی تیاری کررہا ہے تو دوسری طرف فاروق ستارپوری رابطہ کمیٹی تحلیل ہی کرنے پر غور کر رہے ہیں۔

احمد علی کیف

Urdu Content Lead