حوا کی ایک اور بیٹی کو زندہ جلادیا گیا

حوا کی ایک اور بیٹی کو زندہ جلادیا گیا


ایبٹ آباد(24نیوز) ایبٹ آبادمیں خاوند کے ہاتھوں مبینہ طور پر زندہ جلائی جانےوالی 20 سالہ حرا کے قتل کا مقدمہ درج نہ ہوسکا۔

تفصیلات کے مطابق ایبٹ آباد  میں خاوند کے ہاتھوں زندہ جلائی جانے والی حرا کے قتل کی ایف آئی آر درج نہ ہوسکی، پولیس نے والد کی درخواست پر صرف رپورٹ درج  کی ، مقتولہ کے والد کا کہنا تھا کہ پولیس میری بیٹی کے قاتلوں کو بچا رہی ہے، کامران نے اپنی دوست لڑکی سے مل کر بیٹی کو زندہ جلایا ، زندہ جلانے سے قبل کامران اور اس کی دوست فائزہ سے بیٹی کا جھگڑا ہوا تھا ۔

والد کا کہنا تھا کہ کامران پہلے بھی میری بیٹی پر تشدد کرتا تھا ، کامران اور فائزہ کے تعلقات  کا راز سامنے آنے پر بیٹی کو زندہ جلایا گیا، پولیس قتل کا مقدمہ درج کرے ۔