بزدارحکومت نے بلوچستان کی مالی امداد روک دی

بزدارحکومت نے بلوچستان کی مالی امداد روک دی


لاہور ( 24 نیوز ) سابق دورحکومت میں بلوچستان کیلئے مالی امداد کا اعلان ہوا تھا، مالی امداد بلوچستان میں ووکیشنل ٹریننگ انسٹیٹیوٹ کیلئے دی جانا تھی، ادھر وزرا اور بیورو کریسی کی رہائش گاہوں کی مرمت کیلئے 10 کروڑ کی اضافی گرانٹ کی منظوری دے دی گئی۔

سابق دور حکومت میں بلوچستان حکومت کے ساتھ معاہدہ طے پایا تھا کہ پنجاب حکومت بلوچستان میں پڑھے لکھے نوجوانوں کو برسر روزگار بنانے کے لیے ووکیشنل ٹریننگ انسٹیٹیوٹ کی مد میں مالی امداد دے گی، لیکن بزدار حکومت نے بلوچستان حکومت کے بقایاجات 27 کروڑ روپے کے اجرا سے انکار کردیا،  

سابق دورحکومت میں 15 کروڑ روپے کے فنڈز بلوچستان حکومت کو منتقل کیے گئے تھے، جس پر پراجیکٹ کی تکمیل کیلئے بلوچستان حکومت نےراوں مالی سال مزید فنڈز کے اجرا کی استدعا کی،ذرائع کےمطابق فنڈز کا اجرا رواں مالی سال میں جاری بحران کی وجہ سے روکا گیا جبکہ رواں مالی سال میں حکومت بلوچستان کے لیے بجٹ میں بھی گرانٹ مختص نہ کی گئی۔

دوسری جانب پنجاب کےوزراء اوراعلی افسران کی جی او آر ون میں سرکاری رہائش گاہوں کے باہر سڑکوں کی تعمیر کے لیے فنڈز بجٹ میں مختص نہ ہونے کے باوجود جاری کرنے کی منظوری دے دی گئی ہے۔