"رواں مالی سال پاکستان کا جی ڈی پی صرف 2.4 فیصد رہیگا"



24نیوز: وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ معیشت صحیح ہورہی ہے اور عالمی ادارے بھی اس کا اعتراف کر رہے ہیں، لیکن عالمی بینک نے پاکستان کی ترقی کی شرح کے تخمینے میں مزید کمی کر دی، حکومت کا رواں مالی سال ترقی کا ہدف 4 فیصد لیکن عالمی بینک کا اندازہ ہے کہ شرح نمو صرف 2.4 فیصد تک رہنے کا امکان ہے۔

 وزیراعظم عمران خان نے چند روز قبل ہی خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ ملکی کی معیشت بہتر ہورہی ہےاور عالمی ادارے بھی اس کا اعتراف کر رہے ہیں۔ وزیراعظم کا دعویٰ ایک طرف دوسری جانب عالمی بینک نے تازہ رپورٹ میں پاکستان کی معاشی ترقی کی رفتار مزید کم کردی، ورلڈ بینک کی نئی رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال پاکستان کی اقتصادی ترقی کی شرح 2.4 فیصد تک رہنے کا امکان ہے۔

  عالمی بینک نے جون 2019 میں اقتصادی ترقی کی شرح 2.7 فیصد ہونے کا امکان ظاہر کیا تھا، اگلے مالی سال 2021 میں اقتصادی ترقی کی شرح 3 فیصد تک پہنچنے کا امکان ہے،یہ شرح بھی پہلے تخمینے سے ایک فیصد کم ہے، جبکہ مالی سال 2022 میں شرح نمو 3.9 فیصد تک جا سکتی ہے۔ رپورٹ کے مطابق جنوبی ایشیا میں صرف پاکستان میں مہنگائی کی شرح زیادہ ہے، جبکہ ٹیکسوں کی وصولی کے نظام میں اصلاحات نہ ہونے کی وجہ سے مالیاتی خسارے میں اضافہ ہو سکتا ہے۔

عالمی بینک نے رواں سال بنگلہ دیش میں ترقی کی شرح 7 فیصد سے زیادہ رہنے جبکہ بھارت میں شرح نمو 5 فیصد تک کم ہونے کا امکان ظاہر کیا ہے۔

Shazia Bashir

Content Writer