پی ٹی آئی کو بڑا دھچکا ،دو ”الیکٹیبلز“انتخابی دوڑ سے باہر کردئیے گئے

پی ٹی آئی کو بڑا دھچکا ،دو ”الیکٹیبلز“انتخابی دوڑ سے باہر کردئیے گئے


چکوال( 24نیوز ) تحریک انصاف کو الیکشن سے پہلے ہی بڑا دھچکا لگ گیا،سپریم کورٹ نے دو امید واروں کو الیکشن لڑنے کیلئے نااہل قرار دے دیا،سابق ضلع ناظم چکوال سردار غلام عباس کو سپریم کورٹ آف پاکستان نے الیکشن لڑنے سے روک دیا۔
سابق ضلع ناظم چکوال سردار غلام عباس کو سپریم کورٹ آف پاکستان نے الیکشن لڑنے سے روک دیا۔سردار غلام عباس حال ہی میں مسلم لیگ
ن کو چھوڑ کر تحریک انصاف میں شامل ہوئے تھے۔ انہوں نے چکوال کے حلقے این اے 64سے پاکستان تحریک انصاف کے ٹکٹ پر اپنے کاغذات نامزدگی جمع کروائے تھے، مگر ان پر اثاثے چھپانے اور نیشنل ٹیکس نمبر نہ بنوانے کا اعتراض داخل کیا گیا۔ڈسٹرکٹ ریٹرنگ افسر نے ان اعتراضات کو مسترد کرتے ہوئے ان کے کاغذات نامزدگی منظور کیے تھے۔بعد ازاں اعتراض کنندہ نے الیکشن ٹریبونل میں اپیل کی جومنظور کر لی گئی اور ریٹرنگ افسر کے فیصلے کومسترد کرتے ہوئے سردار عباس کو تا حیات نااہل کر دیا۔
اسی دوران پاکستان تحریک انصاف نے ان کی جگہ ایک اور مسلم لیگی امیدوار برائے صوبائی اسمبلی پی پی 23سردار ذولفقار دلہہ کو این اے 64کا ٹکٹ جا ری کر دیا۔سردار عباس ٹربیونل کے فیصلے کے خلاف لاہور ہائی کورٹ چلے گئے وہاں بھی وہ نااہل قرار پائے تاہم ان کی نااہلی محض اس لیکشن تک محدود کر دی گئی۔سردار عباس نے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل کی جسے آج صرفدو منٹ کی سماعت کے بعد خارج کر دیا گیا۔چیف جسٹس ثاقب نثار اور جسٹس اعجاز الاحسن پر مشتمل بینچ نے اپنے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ جو شخص پر تعیش زندگی گزارتا ہے اور لاکھوں روپے الیکشن لڑنے پر خرچ کرتا ہے وہ ٹیکس کیوں نہیں دیتا؟ایسا شخص اسمبلی ممبر بننے کا اہل نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  جنوبی پنجاب انتظامیہ کے اوچھے ہتھکنڈے، بلاول بھٹو کے بڑھتے قدم روکنے کی کوشش
سردارعباس کے وکیل کامران مرتضیٰ نے عدالت کو بتایا کہ ٹیکس نمبر نہ ہونے پر نااہل کرنے کی نظیر موجود نہیں ہے جس پر عدالت نے کہا کہ آج ہم یہ نظیر بنا دیتے ہیں۔سردار عباس نے بھی بات کرنے کی اجازت مانگی جسے عدالت نے یہ کہتے ہوئے مسترد کر دیا کہ آپ ٹیکس نہیں دیتے آپ خاموش ہو جائیں آپ کے وکیل نے جو کہنا تھا کہہ دیا ہے۔این اے 64پر ان کے متبادل امیدوار سردار آفتاب اکبر کے کاغذات نامزدگی بھی انہی وجوہات کی بنا پر مسترد کر دیے گے۔کیونکہ وہ بھی تحصیل ناظم رہ چکے ہیں۔تاہم وہ صوبائی اسمبلی کے حلقے پی
پی 23سے الیکشن میں حصہ لے سکتے ہیں۔
دوسری جانب پاکستان کے الیکشن کمیشن نے انتخِابی پوسٹر پر برّی فوج کے سربراہ اور سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کی تصاویر شائع کرنے پر تحریکِ انصاف کے صوبائی امیدوار کو الیکشن لڑنے کے لیے نااہل قرار دے دیا ہے۔،تحریکِ انصاف کے امیدوار ناصر چیمہ پنجاب کے شہر گوجرانوالہ میں صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی پی 53 سے 25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات میں امیدوار تھے۔
ان کے انتخابی پوسٹرز کی تصاویر انتخابی مہم کے آغاز کے بعد سے سوشل میڈیا پر گردش کر رہی تھیں اور اس سلسلے میں ایک درخواست الیکشن کمیشن میں بھی دی گئی تھی۔
پیر کو اس درخواست کی سماعت کے بعد چیف الیکشن کمشنر جسٹس ریٹائرڈ سردار رضا خان فیصلہ سنایا،دو جولائی کو گذشتہ سماعت پر چیف الیکشن کمشنر نے ناصر چیمہ کو طلب کیا تھا اور ان سے استفسار کیا تھا کہ کیا آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور سپریم کورٹ کے موجودہ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار ان کے رشتہ دار ہیں، جس پر ناصر چیمہ کا کہنا تھا کہ یہ دونوں شخصیات ان کے رشتہ دار نہیں ہیں۔