نقیب قتل کیس: ملزم راؤانوار کو جیل میں بی کلاس دینے کی درخواست منظور

نقیب قتل کیس: ملزم راؤانوار کو جیل میں بی کلاس دینے کی درخواست منظور


کراچی(24نیوز)  انسداد دہشت گردی کی عدالت نے نقیب قتل کیس کے مرکزی ملزم راؤ انوار کو جیل میں بی کلاس دینے کی درخواست منظور کرلی، آئی سندھ اے ڈی خواجہ کہتے ہیں اگر راؤ انوار کو سہولیات دی گئی ہیں وہ عدالت نے دی ہیں اس میں سندھ پولیس کا کوئی کردار نہیں۔

کراچی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں نقیب اللہ قتل کیس کی سماعت ہوئی، کیس کے مرکزی ملزم راؤ انوار کو سخت سیکیورٹی میں عدالت میں پیش کیا گیا، جب کہ تفتیشی افسر ایس ایس پی سینٹرل ڈاکٹر رضوان بھی عدالت میں پیش ہوئے ۔ دوران سماعت ملزم راؤ انوار کے وکیل کے دلائل کے بعد عدالت نے معطل ایس ایس پی کو جیل میں بی کلاس دینے کی درخواست منظور کرلی ۔ ملزم کے گھر کو سب جیل قرار دینے سے متعلق درخواست پر عدالت نےکہاکہ یہ معاملہ فی الحال سندھ ہائیکورٹ میں ہے اس لئے عدالت کےفیصلے کا انتظار کیا جائے ۔ بعد ازاں عدالت نے کیس کی مزید سماعت 14 جون تک ملتوی کردی.

یہ بھی پڑھیں: کراچی بڑی تباہی سے بچ گیا

دوسری جانب سپریم کورٹ رجسٹری کراچی میں وی آئی پیز کو سیکیورٹی دینے کے متعلق کیس میں پیش ہونے کے بعد میڈیا سے غیر رسمی گفتگو میں آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کا کہنا تھا کے راؤ انوار کو میری کوئی سپورٹ حاصل نہیں، اگر راؤ انوار کو سہولیات دی گئی ہیں وہ عدالت نے دی ہیں اس میں سندھ پولیس کا کوئی کردار نہیں

آئی جی سندھ کا مزید کہنا تھا راؤانوار کو قتل کے کیس میں چالان کیا گیا ہے اس سے پہلے کیا کبھی ایسا ہوا ہے، راؤ انوار کے گھر کو سب جیل قرار دیا گیا ہے وہ بھی محکمہ داخلہ نے نوٹیفکیشن جاری کیا ہے۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔