جب چیف جسٹس پاکستان سروسز ہسپتال اور پی آئی سی پہنچے تو کیا ہوا؟

جب چیف جسٹس پاکستان سروسز ہسپتال اور پی آئی سی پہنچے تو کیا ہوا؟


لاہور(24نیوز) سپریم کورٹ کی لاہور رجسٹری میں اہم کیسز کی سماعت کےبعد چیف جسٹس میاں ثاقب نثار سروسز اسپتال اور پی آئی سی کےدورے کیلئے پہنچ گئے۔

 تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار نے لاہور  میں سروسز ہسپتال اور پی آئی سی کا دورہ کیا۔ چیف جسٹس نے  پی آئی سی اور سروسز اسپتال میں مریضوں کو فراہم کی جانے والی سہولیات پر عدم اطمینان کا اظہار کیا ہے، مریضوں اور ان کے لواحقین نے چیف جسٹس کے سامنے شکایات کے انبار لگا دئیے۔ سروسز استپال کی ایمرجنسی میں داخل ہوئے، تو عملے کو موجود نہ پاکر چیف جسٹس برہم ہوگئے، اسی دوان ایک خاتون اپنا رونا لیکر چیف جسٹس کے پاس پہنچ گئی، خاتون نے رو رو کر چیف جسٹس کو اپنے مسائل سنائے۔

سروسز اسپتال سے نکل کر چیف جسٹس پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی پہنچے، تو وہاں وہیل چیئر پر بیٹھی خاتون نے اسپتال میں علاج معالجے کی سہولیات کا پول کھول کر رکھ دیا۔خاتون نے چیف جسٹس کو بتایا کہ وہ دو روز سے وہیل چیئر پر ہے، اس کیلئے اسپتال میں کوئی بستر نہیں، خاتون نے چیف جسٹس کو بتایا کہ یہاں صرف پیسے اور تعلقات والوں کا علاج ہوتا ہے۔

اس موقع چیف جسٹس کے ساتھ موجود سیکریٹری صحت نے بھی کارروائی ڈال دی، سی او سے استفسار کیا کہ وسائل کے باوجود شکایات کیوں ہیں؟ سی او نے بتایا کہ حکومت نے ریفرل سسٹم بنایا نہ ہی سہولیات دیں، ینگ ڈاکٹرز نے چیف جسٹس کو بتایا کہ ایمرجنسی حکومت نے نہیں ڈونرز کے عطیات سے بنائی گئی۔