پاکستان نے ’میڈ اِن امریکہ جہاد لڑا‘ داعش کون لایا؟ دنیا جانتی ہے: خواجہ آصف


اسلام آباد (24 نیوز) پاکستان کے وزیر خارجہ خواجہ آصف بھی امریکہ کے خلاف کھل کر میدان میں آ گئے ہیں۔ انھوں نے کہا ہے کہ پاکستان نے ماضی میں روس کے خلاف ’میڈ اِن امریکہ جہاد‘ لڑا۔ ساری دنیا کو پتہ ہے داعش کون لے کر آیا۔

وزیر خارجہ نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے اب پراکسی وار کا حصہ نہ بننے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ حکمرانوں نے اپنے مفادات کے لیے ملک بیچ دیا۔ دنیا میں مسلم امہ پر ظلم ہو رہا ہے۔ ہمیں اپنے دشمن کی شناخت کرنا ہو گی۔ مسلم ممالک کسی ایک مسئلہ پر بھی متحد نہیں۔ مسلم ہمسائے ایک دوسرے سے بات کرنے کو تیارنہیں۔ مقبوضہ کشمیر کی صورت حال کو سامنے رکھ لیں۔

انہوں نے کہا داعش ختم نہیں ہوئی ، صرف اپنا پتا تبدیل کر لیا ہے۔ داعش عراق سے نکل کر افغانستان میں آ گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ منصوبہ کے تحت مسلم ممالک کا شیرازہ بکھرا جا رہا ہے۔ ہمیں اپنے گریبان میں جھانکنا چاہیئے۔

خواجہ آصف نے کہا کہ ہمارے حکمرانوں نے ملک کے مفادات کے لیے قربانیاں دیں۔ دنیا کو معلوم ہے کہ داعش کو کون لے کر آیا۔ ہم نے روس کے خلاف میڈ ان امریکا جہاد لڑا۔ سب کو پتہ ہے کہ داعش کے پیچھے کون ہے۔

یہ بھی پڑھئے: وزیر خارجہ نے بھری اسمبلی میں ”ٹھینگا“دکھادیا

انہوں نے کہا کہ پاکستان نے یمن جنگ میں شرکت نہیں کی۔ پاکستان نے اب پراکسی نہ بننے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ وہ آج بھی چاہتے ہیں کہ پاکستان پراکسی بن کر افغانستان میں ان کے مفادات کا تحفظ کرے اور پاکستان اب کسی اور کے مفادات کا تحفظ نہیں کرے گا۔

وزیرخارجہ کا مزید کہنا تھا کہ ہمیں طعنہ دیتے ہیں ہم حقانی نیٹ ورک کے سہولت کار ہیں۔ کسی سپر پاور کی خواہش نہیں کہ افغانستان میں امن ہو۔ جن کے پاس 43 فیصد افغان سر زمین ہے۔ ان کو ہماری کیا ضرورت ہے۔ ایوان میں امت مسلمہ کی موجودہ صورتحال پر بحث ہونی چاہیے۔ کل کو ہم بھی نشانہ بن سکتے ہیں اور ہم ان کے نشانے پر ہیں۔

خواجہ آصف کہا کہ حکمران دشمن کے سہولت کار رہے ہیں۔ پاکستان اب کسی اور کے مفادات کا تحفظ نہیں کرے گا۔ خواجہ آصف کا قومی اسمبلی میں اظہارخیال کرتے ہوئے کہنا تھا کہ سعودی عرب میں کچھ پاکستانی ویزے کی معیاد ختم ہونے اور کچھ منشیات کے الزمات میں قید ہیں۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ منشیات ایئرپورٹ حکام کی ملی بھگت سےاسمگل ہوتی ہے۔ افسران قانون پر عمل درآمد کروانے کے بجائے مال کما رہے ہیں۔ سالانہ 130 ارب ڈالر کی منشیات افغانستان سے دیگر ملکوں کو جاتی ہے۔

پڑھنا نہ بھولئے:  طالبان نے حملوں کی دھمکی دے دی، امریکہ حواس باختہ

وزیر خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ حکمران دشمن کے سہولت کار رہے ہیں۔ امریکہ کو عراق اور افغانستان کون لے کر آیا؟ ہم نے روس کے خلاف میڈ ان امریکہ جہاد لڑا۔داعش کو افغانستان کون لے کر آیا ؟

انھوں نے کہا کہ پاکستان اب کسی اور کے مفادات کا تحفظ نہیں کرے گا۔ سوموار کو ایوان کو بتاؤں گا کہ انسانی حقوق کونسل میں پاکستانی نمائندہ نے ووٹ کیوں نہیں دیا۔

وفاقی وزیر خارجہ خواجہ آصف کے بیان پر پیپلزپارٹی نے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پیپلزپارٹی خواجہ آصف اور نواز شریف کے حواریوں کی تکلیف کو سمجھ سکتی ہے۔ ن لیگ کے اتحادی بھی ان کا ساتھ چھوڑ رہے ہیں۔

پیپلزپارٹی پارلیمنٹرین کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات ڈاکٹر نفیسہ شاہ نے جاری کردہ ایک بیان میں کہا کہ مسلم لیگ کا شیرازہ بکھر چکا ہے اور ان کی یہ چیخیں اس کا ثبوت ہیں۔

ضرور پڑھئے: عمران خان نے آصف زرداری کے سامنے ہتھیار ڈال دیئے، مریم نواز کا انکشاف

ڈاکٹر نفیسہ شاہ کا کہنا تھا کہ خواجہ آصف اور ان جیسے غیر جمہوری رویوں کے حامل لوگوں کی ذہنیت ان کی اسمبلی میں تقاریر اور دوسری سیاسی جماعتوں کی خواتین ممبران اسمبلی کے بارے میں القابات ان کی سیاسی سوچ کی عکاسی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ کو زرداری فوبیا ہو گیا ہے۔ مسلم لیگ ن حلالہ کی عادی جماعت ہے جس نے ق لیگ کا فاروڈ بلاک بنا کر پانچ سال پنجاب میں عدالتی حکم امتناعی پر حکومت کی۔

نفیسہ شاہ نے مزید کہا کہ پیپلزپارٹی جمہوری طریقہ سے تمام سیاسی جماعتوں سے مشاورت کر رہی ہے۔ مسلم لیگ ن کے اتحادی بھی ان کا ساتھ چھوڑ رہے ہیں۔ تخت لاہور سے وفاداری نبھانے سے فرصت ملے تو خواجہ آصف بطور وزیر خارجہ اپنے فرائض پر بھی توجہ دیں۔