سابق وزیراعظم نوازشریف کو 24گھنٹے میڈیکل کور اپ دینے کا فیصلہ

سابق وزیراعظم نوازشریف کو 24گھنٹے میڈیکل کور اپ دینے کا فیصلہ


لاہور(24نیوز)سابق وزیراعظم نوازشریف کودل کاعارضہ، پنجاب حکومت کی پہلےعلاج میں غفلت،اب سیاسی پوائنٹ سکورنگ کیلئےخانہ پور کردی۔کوٹ لکھپت جیل میں سابق وزیراعظم کو24گھنٹےمیڈیکل کوردینےکافیصلہ کرلیا گیا، پی آئی سی کی ایمبولینس اورڈاکٹرجیل میں میڈیکل کورکیلئےمامورہوگا، طبعیت ناسازہونےپرسابق وزیراعظم نوازشریف کوفوری ہسپتال منتقل کیاجاسکےگا۔

جمعرات کو مریم نواز نے اپنے والد سے ملاقات کے بعد ٹوئٹر پیغام میں پنجاب حکومت سے جیل میں لائف سیونگ یونٹ بنانے کا مطالبہ کیا تھا۔

محمد نواز شریف کی صحت ٹھیک نہیں،اللہ پر بھروسہ کیے ہوئے ہیں: شہباز شریف

‎ادھر پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف نے جیل میں سابق وزیر اعظم محمد نوازشریف سے ملاقات ‎ کی ، شہباز شریف کا کہنا تھا کہ محمد نواز شریف علالت کے باوجود مکمل حوصلے میں اور اللہ پر بھروسہ کئے ہوئے ہیں،نواز شریف کی صحت ٹھیک نہیں ہے اور انہیں کئی دن سے مسلسل انجائنا کی تکلیف ہورہی ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ ‎گزشتہ روز پی آئی سی اور کے ای کے سینیئر پروفیسرز نے نوازشریف کا جیل میں معائنہ کیا اور ان کی صحت کے حوالے سے سنجیدہ تحفظات کا اظہار کیا۔ڈاکٹرز نے ایک مرتبہ پھر میاں صاحب کے فوری علاج شروع کرنے کا مشورہ دیا۔ نواز شریف کو جنوری سے دل کی تکلیف شروع ہوئی مگر حکومت علاج کے معاملے پر بے حسی کامظاہرہ کرتی رہی۔

ڈاکٹروں نے بے بسی کا اظہار کردیا

سابق وزیر اعظم نے کہا ہے کہ ‎جب مجھے سروسز ، پی آئی سی اور جناح ہسپتال لے جایا گیا تو وہاں کے ڈاکٹرز نے کہاکہ ہمیں صرف بیماری کی نوعیت پتہ لگانے کا کہاگیا ہے، ہم علاج شروع نہیں کرسکتے، ‎ڈاکٹرز نے علاج شروع کرنے کے حوالے سے بے بسی ظاہر کی اور کہا کہ یہ ہمارا مینڈیٹ نہیں ہے، ہمیں حکومت نے علاج نہیں صرف انویسٹی گیشن (تشخیص)کا کہاہے، ‎اہلخانہ کے اصرار کے باوجود نوازشریف نے ہسپتال منتقل ہونے سے ایک مرتبہ پھر معذرت کرلی۔ ‎

ان کا کہنا تھا کہ  کے نام پرجو سلوک میرے ساتھ پہلے کیا گیا، اب پھر حکومت کا غیر سنجیدہ رویہ اور مزید تضحیک برداشت نہیں کرونگا ‎،حکومت ایک مرتبہ پھر تمسخر اڑانے کا ارادہ رکھتی ہے۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer