تحریک انصاف نے جنوبی پنجاب کا ’محاذ‘ سر کر لیا


اسلام آباد(24نیوز)جنوبی پنجاب صوبہ محاذ تحریک انصاف میں ضم ہوگئی،چیئرمین تحریک انصاف عمران خان اور جنوبی پنجاب صوبہ محاذ کی جانب سے خسرو بختیار نے معاہدے پر دستخط کردیے جس کے مطابق پی ٹی آئی اقتدار میں آکر جنوبی پنجاب صوبہ بنانے کی پابند ہوگی,عمران خان نے تمام رہنماﺅں کو پارٹی پرچم پہنائے۔

مولانا سمیع الحق کے علاوہ کسی سے اتحاد نہیں ہوگا:عمران خان

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں جنوبی پنجاب صوبے پر یقین رکھتا ہوں،یہاں کے لوگوں کا احساس محرومی دور کریں گے۔پہلی مرتبہ خیبرپختونخوا میں تحریک انصاف اقتدار میں آئی، وہاں لوگوں کو گیس اور پانی کا پورا حصہ نہیں ملتا، باہر سے جو سرمایہ کاری آتی ہے تو وفاق اسے ہونے نہیں دیتا، اس عمل سے احساس محرومی پیدا ہوتی ہے۔

عمران خان نے کہا کہ جنوبی پنجاب میں احساس محرومی بڑھتی جارہی ہے، لاہور میرا شہر ہے جہاں پنجاب کا 53 یا 55 فیصد ترقیاتی بجٹ لگتا ہے، مجھے خوش ہونا چاہیے لیکن اس سے لاہور کے قریبی شہر شیخوپورہ، قصور اور دیگر ترقی سے رہ جاتے ہیں، یہی احساس محرومی جنوبی پنجاب میں ہے۔صوبہ بنانا آسان نہیں لیکن ہم ابھی کمیٹی بنادیں گے اور اس کی پوری تیاری کریں گے، فاٹا کا انضمام بھی بہت ضروری ہے اور وہ آسان نہیں لیکن اس کے لیے ہم کوشش کریں گے۔ بلدیاتی نظام لانا بھی ضروری ہے، جب تک بلدیاتی نظام نہیں آئے گا نچلی سطح پر لوگوں کے مسئلے حل نہیں ہوں گے۔مولانا سمیع الحق کے علاوہ کسی سے اتحاد نہیں ہوگا

میڈ یا سے گفتگو کرتے ہوئے جنوبی پنجاب محاذ کے صدر خسرو بختیار نے کہا ہے کہ ہم جنوبی پنجاب صوبے کے وعدے پر پی ٹی آئی میں شامل ہورہے ہیں،تحریک انصاف نے ہمیں اپنے منشور کا حصہ بنایا،ہمیں عمران خان پر امید ہے،کئی سالوں سے جنوبی پنجاب محرومیوں کا شکار ہے،یہاں سے لوگوں کے عہدوں پر ہونے کے باوجود مسائل نہیں حل ہوسکے ہیں۔صوبہ محاذ میں 12 ارکان اسمبلی اور7 سابق پارلیمنٹیرینز شامل ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ن لیگ سے جنوبی پنجاب کے ایک گروپ نے جنوبی پنجاب کے نام پر علیحدگی اختیار کی اورصوبے کی خاطرگروپ کا اعلان کیا لیکن آئے وہاں جہاں پر آنا تھا۔ جنوبی پنجاب صوبہ محاذ، تحریک انصاف میں ضم ہونے کو تیار ہوگیا۔

یہ بھی ضرور پڑھیں:جعلی ڈگری کے بعد دھاندلی ،ایک اور ن لیگی وکٹ گر گئی 

 واضح رہے کہ جنوبی پنجاب صوبہ محاذ تحریک میں 5 ارکان قومی اسمبلی،7 صوبائی اسمبلی اور 7 سابق پارلیمنٹیرینز شامل ہیں۔ جنوبی پنجاب صوبہ محاذ تحریک کے صدر خسرو بختیار،سردار بلخ شیر مزاری،طاہر بشیر چیمہ، رانا قاسم نون، مخدوم باسط سلطان، طاہر اقبال چودھری، کرم داد واہلہ، قیصر مگسی تحریک انصاف میں شامل ہوں گے۔

یہ بھی پڑھیں:زلزلے سے زمیں ہل گئی،مکان کی چھت گرنے سے3افراد جاں بحق 

 علاوہ ازیں رکن پنجاب اسمبلی ذیشان گورمانی،مرتضیٰ رحیم کھر،علمدار قریشی،نصر اللہ دریشک،افتخار گیلانی، محمد خان جتوئی،محمد خان لغاری، سردار مقصود لغاری بھی تحریک انصاف میں شامل ہوں گے۔

خیال رہے کہ جنوبی پنجاب صوبہ محاذ تحریک کے دوست محمد مزاری،مینہ لغاری،سردار بلخ شیر مزاری اور سمیع اللہ چودھری بھی تحریک انصاف میں شامل ہونے کا اعلان کریں گے۔ جنوبی پنجاب صوبہ محاذ کے سیکرٹری جنرل طاہر بشیر چیمہ کا کہنا تھا کہ جنوبی پنجاب کی خوشحالی کے لیے نئے صوبے کا قیام ضروری ہے۔ تحریک انصاف کی قیادت نے نئے صوبے کے قیام کے حوالے سے سنجیدگی کا مظاہرہ کیا ہے۔

اظہر تھراج

صحافی اور کالم نگار ہیں،مختلف اخبارات ،ٹی وی چینلز میں کام کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں