رواں مالی سال کا تجارتی خسارہ 31 ارب ڈالر کے قریب پہنچ گیا

رواں مالی سال کا تجارتی خسارہ 31 ارب ڈالر کے قریب پہنچ گیا


 24نیوز: ریگولیٹری ڈیوٹی نے درآمدات اور تجارتی خسارہ بڑھنے کی رفتار کم کر دی مارچ میں برآمدات میں 24 فیصد اور درآمدات میں 6 فیصد اضافہ رکارڈ کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق درآمد ی بل 44 ارب 38 کروڑ ڈالر تک پہنچ پاکستان ادارہ شماریات کے مطابق رواں مالی سال کے نو ماہ کے دوران اشیا اور سروسز کی بیرونی تجارت میں پاکستان کو 30 ارب 83 کروڑ ڈالر کا خسارے کا سامنا رہا۔ جو گزشتہ سال اس عرصے سے 18.4 فیصد زیادہ ہے۔ مالی سال کے ابتدائی مہینوں میں تجارتی خسارہ 31 فیصد تک بڑھ گیا تھا۔ صرف مارچ کا تجارتی خسارہ گزشتہ سال سے 4.2 فیصد کم رہا۔

یہ بھی پڑھیں:لیگی حکومت کی ناکامی، شرحِ نمو کے اعدادوشمار سامنے آ گئے

 مجموعی طور پر جولائی سے مارچ کے اختتام تک اشیا کی برآمدات کا حجم 17 ارب 8 کروڑ ڈالر رہا۔ جو گزشتہ مالی سال اس عرصے سے 13 فیصد زیادہ ہے۔ جبکہ اس دوران خام تیل اور دوسری اشیا کا درآمدی بل 44 ارب 38 کروڑ ڈالر تک پہنچ گیا۔ جو پہلے سے 15.6 فیصد زیادہ ہے۔