آسیہ بی بی محفوظ،جلد پاکستان چھوڑ جائیں گی:وزیر اعظم عمران خان



اسلام آباد(24نیوز)وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اگر انڈیا پاکستان پر دوبارہ حملہ کرتا تو پاکستان کے پاس اس کا جواب دینے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں،

برطانوی ٹی وی کو انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ آسیہ بی بی سے متعلق سوال کے جواب میں وزیر اعظم نے کہا آپ دیکھیں گے کہ آسیہ بی بی بہت جلد ہفتوں میں پاکستان چھوڑ دیں گی۔میں آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ آسیہ بی بی محفوظ ہیں اور وہ ہفتوں کے اندر اندر پاکستان چھوڑ کر چلی جائیں گی۔

اگر انڈیا کے انتخابات میں مودی پھر سے کامیاب ہو جاتے ہیں تو امن مذاکرات بحال ہونے کے بہتر مواقع پیدا ہوں گے، کیونکہ اگر کانگرس انتخابات میں کامیاب ہوتی ہے تو شاید وہ پاکستان کے ساتھ کشمیر کے مسئلے کا حل تلاش کرنے میں تھوڑی جھجھک کا شکار ہو کیونکہ انھیں دائیں بازو کی جماعتوں کے ردِ عمل کا ڈر ہوگا، وزیر اعظم نے مزید کہا کہ انہوں نے کبھی ایسی صورتحال کا تصور بھی نہیں کیا تھا جس طرح بھارت میں مسلمانوں پر حملے کیے جا رہے ہیں،اب مسلمان بھارت میں پریشان ہیں ، نریندر مودی بھی اسرائیلی وزیر اعظم کی طرح خوف اور قوم پرست جذبات کی بنیاد پر انتخابات لڑ رہے ہیں۔

وزیر اعظم سے پوچھا گیا کہ وہ بھارتی ہم نصب کو کیا پیغام دینا چاہیں گے تو انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر حل کرنا ہوگا یہ مسئلہ ابلتا ہوا نہیں رہ سکتا، انہوں نے کہا کہ جوہری طور پر مسلح ہمسائے اپنے اختلافات کو صرف مذاکرات کے ذریعے حل کر سکتے ہیں۔

بی بی سی کو دیے گئے انٹرویو میں عمران خان نے  پاکستان اور بھارت   کے درمیان تصادم کے خطرات کے بارے میں بھی بات کی وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ جب حملے کا جواب دیا جاتا ہے تو کوئی بھی اس بات کی پیش گوئی نہیں کر سکتا کہ وہ کہاں تک جائے گا۔ اگر انڈیا پاکستان پر دوبارہ حملہ کرتا تو پاکستان کے پاس اس کا جواب دینے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں، چنانچہ اس صورتِ حال میں دو جوہری مسلح ممالک نے، میں نے محسوس کیا کہ یہ بہت غیر ذمہ دار تھا

ان سے پوچھا گیا اگر انڈیا کی حکومت کہے کہ آپ ابھی تک دہشت گردی کے خاتمے کے لیے مناسب کارروائی نہیں کر رہے اور جیشِ محمد کا رہنما ابھی بھی آزاد گھوم رہا ہے۔ آپ اسے گرفتار کیوں نہیں کرتے؟عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم پہلے ہی ان تنظیموں کو غیر مسلح کر رہے ہیں۔

وزیر اعظم عمران خان آج لاہور آئیں گے

خیال رہے وزیر اعظم عمران خان آج ایک روزہ دورے پر لاہور آئینگے ،جہاں وہ مصروف دن گزاریں گے،یہاں وہ مختلف ملاقاتیں کریں گے،صوبے کی سیاسی،انتظامی صورتحال کا جائزہ بھی لیں گے۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer