بس ہوسٹس سے بدتمیزی اور دھمکیاں، مسافر کیخلاف مقدمہ درج

بس ہوسٹس سے بدتمیزی اور دھمکیاں، مسافر کیخلاف مقدمہ درج


24نیوز: موٹروے پولیس نےخود کوخفیہ ایجنسی کا افسر ظاہرکرکے بس ہوسٹس کو ہراساں کرنے والے شخص کے خلاف قانونی کاروائی کا آغاز کردیا۔ ابتدائی تفتیش کے مطابق دھمکی دینے والے ملزم کا کسی خفیہ ادارے سے کوئی تعلق نہیں۔ وہ ایک ادارے میں انجینئرہے اور اس کے خلاف مختلف دفعات کے تحت مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔واقعے میں لاپرواہی برتنے پرتین موٹروے پولیس اہلکاروں کومعطل کردیاگیاہے۔

 تفصیلات کے مطابق مورخہ7اپریل2019 کو لاہور سے اسلام آباد آتے ہوئے ایک نجی کمپنی کی بس میں بس ہوسٹس کے ساتھ ایک مسافر کی تلخ کلامی ہوئی اور مسافر نے اپنے آپ کو خفیہ ادارے کا افسر ظاہر کرتے ہوئے بس ہوسٹس کو سنگین نتائج کی دھمکیاں دیں اس صورتحال میں موٹر وے پولیس نے کاروائی کرتے ہوئے مداخلت کی اور سواری کو بس سے اتار لیا گیا معاملے کی سنگین نوعیت کے پیش نظر موٹروے پولیس کے اعلی حکام نے انکوائری کمیٹی تشکیل دے دی انکوائری کمیٹی کی جانب سے معاملے کا مختلف پہلوؤں سے جائزہ لیا گیا اور بس ہوسٹس کا بیان بھی قلم بند کیا گیا دوران تفتیش یہ بات سامنے آئی کہ دھمکی دینے والا ملزم کا کسی خفیہ ادارے سے کوئی تعلق نہیں اور وہ ایک ادارے میں انجینئر ہے اس شخص کے اس اقدام کو پیش نظر رکھتے ہوئے تفتیش کا دائرہ بڑھا دیا گیا اور متعلقہ ایجنسی سے رابطہ کر کے تمام معلومات فراہم کی گئی.

ملزم کے خلاف اپنی جھوٹی شناخت ظاہر کرنے اور دھمکیاں دینے پر زیر دفعہ 506, 354, 170 او509 تعزیرات پاکستان کے تحت تھانہ صدر شیخوپورہ میں ایف آئی آر درج کروادی گئی ہے اور قانونی کاروائی کا آغاز کردیا گیا ہے.

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔