کراچی میں بارش رحمت سے زحمت بن گئی، افسوسناک اطلاعات موصول

کراچی میں بارش رحمت سے زحمت بن گئی، افسوسناک اطلاعات موصول


کراچی ( 24نیوز ) بارش نے جل تھل ایک کردیا،کرنٹ لگنے سےدوافراد جاں بحق ہوئے جبکہ قربانی کے چھے جانوروں کی جان بھی چلی گئی،کارپردرخت گرنےسےدوافرادزخمی بھی ہوئے۔

تفصیلات کے مطابق شہر قائد میں مون سون کے دوسرے اسپیل کی ا نٹری شروع ہوچکی ہے، عوام ایک طرف بارشوں سے پریشان ہیں تو دوسری جانب  کے الیکٹرک   کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ برابر سے جاری ہے،بارشوں کی وجہ سےدوشہریوں کی جانیں چلی گئیں،سولجربازارمیں سترہ سالہ لڑکا شعیب،منگھوپیرمیں پچیس سالہ رئیس نواب کرنٹ لگنےسےجاں بحق ہوئے۔

علاوہ ازیں کرنٹ لگنے سے قربانی کے چھے جانوربھی زندہ نہ رہے،سولجربازارمیں تین ،گارڈن میں ایک،ملیرآسو میں دو جانوروں کی جان گئی،ناظم آباد میں تیزہواؤں کےباعث درخت کارپرگرگیا جہاں دوافرادزخمی ہوئے،ملیرہالٹ میں دومسافربسیں گڑھے میں گرگئیں۔

ضرور پڑھیں:انکشاف، 24 اگست2019

محکمہ موسمیات کے مطابق شہر میں سب سے زیادہ سے بارش 32 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی، شہر کے مختلف علاقوں میں بوندا باندی کا سلسلہ تاحال جاری ہے،شہر میں سب زیادہ بارش ایئرپورٹ پر 32 ملی میٹر رکارڈ کی گئی،مسرور بیس پر 31 ۔ فیصل بیس اور سرجانی میں 25 ، یونیورسٹی روڈ پر 23 ، ناظم آباد میں 20، صدر میں 12 ،کیماڑی میں 10 ،نارتھ کراچی میں 9 ملی میٹر اور گلشن حدید میں 4 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

محکمہ موسمیات کا کہناتھا کہ پچھلے مون سون سسٹم نے اوسط 80 سے100 ملی میٹر بارش برسائی تھی جبکہ حالیہ سسٹم 100 ملی میٹر سے زائد بارش برسا سکتا ہے۔