حیدرآباد میں چائنہ کٹنگ کے ذریعے سرکاری اراضی پرقبضہ

حیدرآباد میں چائنہ کٹنگ کے ذریعے سرکاری اراضی پرقبضہ


حیدر آباد( علی حمزہ) حیدرآباد میں چائنہ کٹنگ کے ذریعے سرکاری اراضی پرقبضہ کرلیا گیا۔ سرکاری اراضی پرشادی ہالز اوررہائشی عمارتیں بنادی گئیں۔ مئیرطیب حسین نے سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کوذمہ دارٹھہرایا۔

چائنہ کٹنگ پاکستانیوں کے لیے کوئی نیا لفظ نہیں۔ کراچی میں چائنہ کٹنگ کے ذریعے ہزاروں ایکڑ اراضی پرقبضے کیے گئے۔ اب حیدرآباد بھی چائنہ کٹنگ سے نہ بچ سکا۔ سرکاری اراضی پرشادی ہالز اوررہائشی عمارتیں بنادی گئیں کچھ اب بھی زیرتعمیرہیں.مئیر حیدرآباد طیب حسین نے سرکاری زمینوں پر چائنہ کٹنگ کا اعتراف تو کرلیا لیکن ملبہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی پر ڈال دیا, کہتے ہیں حیدرآباد کے لیے کراچی میں بیٹھے ایس بی سی اے کے افسران این او سیز جاری کرتے ہیں.

مئیرحیدرآبادطیب حسین کا کہنا ہے کہ ان کی مئیرشپ سے پہلے ایکسز لینڈ فروخت ہونے کی شکایات تھیں جس کے بعد اس پر پابندی عائدکردی ،تاہم ٹوئینٹی فور کوملنے والی دستاویزات کے مطابق مئیر کی پابندی کے بعد بھی ایک درجن سے زائد افراد کو زمین الاٹ کی گئی .

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔