قصور:7سالہ زینب کے قتل کے خلاف ہڑتال،وزیر اعلیٰ کا نوٹس، رپورٹ طلب

قصور:7سالہ زینب کے قتل کے خلاف ہڑتال،وزیر اعلیٰ کا نوٹس، رپورٹ طلب


قصور (24نیوز) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف کا قصور کے علاقے میں 7 سالہ بچی کے قتل کے واقعہ کا سخت نوٹس ، ملزمان کی فوری گرفتاری کا حکم۔

تفصیلات کے مطابق کے مطابق وزیراعلیٰ نے انسپکٹر جنرل پولیس سے واقعہ کے بارے میں رپورٹ طلب کر لی, واقعہ میں ملوث ملزمان کو گرفتار کرکے قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے۔ وزیر اعلیٰ نے کہا معصوم بچی کے قتل کے ملزم قانون کے مطابق قرار واقعی سزا سے بچ نہیں پائیں گے, کیس پر پیش رفت کی ذاتی طور پر نگرانی کروں گا۔ وزیرا علیٰ پنجاب شہباز شریف نے لواحقین سے  شدید دکھ کا اظہارکیا اور کہا انصاف فراہم کریں گے۔ 

قصورمیں درندگی کے بعد بچیوں کےقتل کا سلسلہ تھم نہ سکا، زینت ابھی چلڈرن اسپتال میں ہے کہ زینب کا اغوا ، تشدد کے بعد گلا دبا کر قتل کر دیا گیا،شہریوں میں غم و غصہ،قصور میں مکمل ہڑتال رہی،کاروباری مراکز کردیئے گئے ہیں۔

سات سالہ بچی زینب کو چار روز پہلے اغوا کیا گیا،ملزموں نے معصوم بچی زینب کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد گلا دباکر قتل کیا ، بچی کی لاش ذکی اڈہ کالی پل کے قریب سے مل گئی ، جسے پوسٹ مارٹم کے لئے ڈی ایچ کیو منتقل کیا گیا, زینب کے اغوا اور قتل کے خلاف ہڑتال کر دی،لوگوں کا مظاہرہ ، وکلا نے عدالتی بائیکاٹ کر دیا.

آئے روز معصوم بچوں کے اغوا اور زیادتی کے بعد قتل ،قصور پولیس کی کارکردگی پر سوالیہ نشان اٹھ گیا، چند ماہ کے دوران زیادتی کے بعد قتل ہونے والی بچیوں کی تعداد بارہ ہوگئی۔ایک جیسی وارداتوں سے کسی سیریل کلر یا منظم گروہ کا بھی خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔

معصوم زینب کے قتل پر سوشل میڈیا پر بھونچال آ گیا ، ہزاروں افراد نے انصاف کے لیے مہم چلا دی ہے جبکہ جسٹس فار ز ینت ٹوئٹر پر ٹاپ ٹرینڈ بن گیا ہے۔

سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا قصور میں معصوم بچی کا قتل ناقابل معافی جرم ہے، درندوں کو گرفتار کر کے سخت سزا دی جائے، بلاول بھٹو زرداری بولے وحشیانہ واقعہ شریفوں کے اقتدار کے منہ پر طمانچہ ہے۔ رہنما مسلم لیگ ن مریم نواز کا کہنا تھا کہ ملزموں کو نشان عبرت بنایا جائے۔

ٹوئٹر پر ٹاپ ٹرنڈ  جسٹس فار زینب ٹاپ پر ہے: