قصور:زینب کے قتل کیخلاف احتجاج،مظاہرین پر فائرنگ 5 افراد زخمی

قصور:زینب کے قتل کیخلاف احتجاج،مظاہرین پر فائرنگ 5 افراد زخمی


قصور (24نیوز) قصور میں زینب کے قتل کیخلاف احتجاج کرنے والے مظاہرین نے ڈی پی او آفس پر دھاوا بول دیا،پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے ہوائی فائرنگ کی۔

ذرائع کے مطابق قصور میں زینب قتل کیس کیخلاف احتجاج کرنے والے مظاہرین کا ڈی پی او آفس پر دھاوا بول دیا جس کے نتیجے میں پولیس نے مظاہرین کومنتشر کرتے کیلئے فائرنگ کر دی، فائرنگ کے نتیجے میں 5 افراد زخمی ہو گئے جبکہ زخمی افراد کو ڈسٹرکٹ اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے, قصور میں کمسن بچی کو مبینہ زیادتی کے بعد قتل کر دیا گیا جس کا چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے بھی نوٹس لے لیا.

قصور میں  جاری مظاہروں میں حالات کشیدہ ہو گئے، پولیس نے بھاری نفری طلب کر لی،مظاہرین نے ڈی پی او آفس پر پتھراؤ کیا جس پر شہریوں کا کہنا تھا کہ قصور میں ایک سال کے دوران 11 کمسن بچیوں کو اغوا کے بعد قتل کیا گیا، لیکن پولیس ایک بھی ملزم کو گرفتار نہیں کر سکی۔

واضح رہے کہ بچی کی لاش جس جگہ سے ملی، یہ وہی مقام ہے جہاں اس سے قبل بھی ریپ کا شکار ہونے والے بچوں کی لاشیں مل چکی ہیں۔

وزیراعلیٰ شہباز شریف نے قصور میں مبینہ زیادتی کے بعد بچی کے قتل کا نوٹس لیا،ان کا کہنا تھا کہ قاتل قانون کے مطابق قرار واقعی سزا سے بچ نہیں پائیں گے۔