نجی سکولوں میں پانچ ہزار سے زائد فیسوں پر 20 فیصد کمی ہوگی: چیف جسٹس

نجی سکولوں میں پانچ ہزار سے زائد فیسوں پر 20 فیصد کمی ہوگی: چیف جسٹس


اسلام آباد(24نیوز) سپریم کورٹ نے نجی سکولوں کی فیسوں پر کٹ لگادیا۔  چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ نجی سکولز تعلیم دینے کے لیے ہیں، نوٹ بنانے کے لیے نہیں۔ پانچ ہزار سے زائد فیسوں پر بیس فیصد کمی ہوگی۔مالکان نے احتجاج کرنا ہے تو دھرنا دیں۔

 نجی تعلیمی اداروں کی فیسوں میں اضافے سے متعلق کیس میں آیف بی آر نے رپورٹ پیش کردی۔ بتایا گیا کہ 22 میں سے 7 ادارے ایک ارب 22 کروڑ روپے کے نادہندہ ہیں۔  سربراہ عدالتی کمیشن نے عدالتی فیصلے کی خلاف ورزی کرنے والے اسکولز کی تفصیلات پیش کیں۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ کچھ بڑے نجی اسکولز ردعمل دے رہے ہیں۔ تعلیمی ادارے تعلیم دینے کیلئے ہیں نوٹ بنانے کیلئے نہیں۔ پرائیویٹ اسکولز ایسوسی ایشن کے صدر زعفران الہٰی کا کہنا ہےگرمیوں کی چھٹیوں کی فیس واپسی سے 80 فیصد ادارے بند ہوجائیں گے۔اس پر چیف جسٹس نے کہا اسکول بند کرنے ہیں توکر دیں۔دیکھتا ہوں کیسے بند کرتے ہیں۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیےکہ نجی سکول محض والدین کا استحصال کر رہے ہیں۔ یہ المیہ ہے کہ سرکاری سکولز تعمیر نہیں ہوسکے۔ ریگولیٹر کو مضبوط بنانا پڑے گا۔ ٹیوشن سینٹر سے نجی سکولز بن گئے۔

جسٹس فیصل عرب نے ریمارکس دئیے کہ 70 سال سے تعلیم کے فروغ پر توجہ نہیں دی گئی۔ جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا صوبوں میں مختلف تاریخ پڑھائی جاتی ہے۔ سماعت غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کر دی گئی۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔